چوہدری رحمت الٰہی کی زندگی پر نظر

تحریر: محمد نبیل حسن چوہدری (بڑاگواہ)

0

چوہدری رحمت الٰہی 1923ء میںصوبہ پنجاب کے ضلع جہلم اور تحصیل سوہاوہ کے نواحی گاؤں ککرالہ میں پیدا ہوئے،گریجویشن کرنے کے بعد پاک فوج میں ملازمت اختیار کرلی،چونکہ ذہن وفکر پر دینی تعلیمات کا گہرا اثر پڑھ چکا تھا اور بالخصوص تحریک اسلامی سے وابستگی سے انکے خیالات میں مزید پختگی اور دین سے قربت پیدا ہوگئی تھی،اس لئے ملازمت پرزیادہ عرصہ برقرار نہ عہ سکے اور بالآ خر 1951ء میں استعفیٰ دیدیا۔

آپ 1947ء میں جماعت اسلامی کے رکن بننے،تحریک اسلامی پاکستان میں جماعت کی طرف سے دارالسلام پٹھان کوٹ (انڈیا)میں مہاجرین کی نگہداشت ،خدمت اورانکو مشرقی پاکستان کی سرحد سے بحفاظت پاکستان پہنچانے کی ذمہ داری سونپی گئی،چوہدری رحمت صاحب نے قیام پاکستان کے بعد بھی لاہور کے گردونواح میں آباد ہونے والے مہاجرین کی بحالی کے لئے گراں قدر خدمات دیں،آپ ان خاموش طبع ،گمنام اور سرگرم کارکنان میں سے ہیں،کہ جن کی نظر فقط رضائے الٰہی پر مرکوز ہوتی ہے۔

محترم چوہدری صاحب نے انتہائی مشکل اور دور ابتلا میں اہل حق کے ہر اول دستے میں نمایاں خدمات انجام دیں،1953ء کی تحریک ختم نبوت میں سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ اور میاں طفیل صاحب کی گرفتاری کے دوران قائم مقام امیرجماعت اسلامی کی ذمہ داری اداکی،1957اور پھر1965,1978میں قیم جماعت اسلامی پاکستان رہے،ان تمام دورانیوں کو ملاکر تقریباََ 20برس سے زائد تک بحیثیت قیم امیرجماعت اسلامی کے خدمات انجام دے چکے ہیں۔

1979 میں وہ نائب امیرجماعت اسلامی پاکستان مقررہوئے،اس دوران امیرجماعت کی غیر موجودگی میں متعدد دفعہ قائم مقام امیر جماعت کی ذمہ داری بھی اداکی، 1960کی دہائی میں محترمہ فاطمہ جناح اور ایوب خان کے درمیان انتخابی مہم میں جماعت کے حوالے سے بہت اہم کردار اداکیا،چوہدری رحمت الٰہی 1977ء میں پاکستان قومی اتحاد (پی این اے)کے پارلیمانی بورڈ کے ممبر ر ہے اور تحریک نفاذ نظام مصطفی ﷺ میں انہیں دوبارہ گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا گیا۔

انہوں نے پی این اے کے قائم مقام جنرل سیکرٹری کی حیثیت سے راولپنڈی میں لانگ مارچ کی قیادت کی،جب پاکستان قومی اتحاد (پی این اے)1978میں حکومت میں شامل ہوئی تو چوہدری صاحب بجلی اور قدرتی وسائل کے وزیر بنا ئے گئے،نو ماہ کے مختصر عرصے میں پی این اے نے پاکستان کو جمہوریت کی راہ پر ڈالنے کی بھرپور کوشش کی،اسلامائزیشن کے عمل کو شروع کیاگیا،جس کے تحت حدود آرڈینینس،زکوٰۃ ،معیشت سے سود کے خاتمے کے فیصلہ ،تعلیمی پالیسی کی تشکیل،جس میں قرآن وسنت کے خلاف قوانین کو چیلنج کیاجاسکتاہے عمل میں لائے گئے،اس کے علاوہ دیگر بہت سارے اقدامات کئے گئے۔

نائب امیرجماعت اسلامی کی حیثیت سے چوہدری رحمت الٰہی جماعت اسلامی کی مزددور،زمیندار تنظیموں ،پارٹی کی مالیاتی شعبے اور اسلامی تعلیمی سوسائٹی کی خاص طور پر نگرانی کرتے رہے،چوہدری رحمت الٰہی نے کئی مرتبہ بیرونی دورے کئے، یورپی اور مشرق وسطی کے ممالک کا سفر بھی کیا،مادری زبان پنجابی اردو کے علاوہ انگریزی میں بھی مہارت تھی، 5جنوری 2019کو اپنے خلاق حقیقی سے جاملے۔

چوہدری رحمت الٰہی نے ڈومیلی سے سولہ کلومیڑ دور اپنے دورِ وزارت میں بڑاگواہ میںایک گریڈ اسٹیشن بنوایا،جس سے آج پوری ڈومیلی سب تحصیل سوہاوہ اور دیگر دور دراز حلقے بجلی کی سہولیات سے مستفید ہورہے ہیں،یہ ایک چوہدری رحمت الٰہی صاحب کیلئے صدقہ جاریہ ہے ۔ایسے شخص ہمیں کم ہی ملیں گے،جو اس معاشرے کی خدمت کرنے میں کوئی کسر نہ باقی چھوڑی ،چوہدری رحمت الہی صاحب نے اپنی پوری زندگی جماعت اسلامی کی خدمت میں زیادہ گزاری ،چوہدری رحمت الٰہی صاحب کے جانے سے بڑا باب بند ہوا۔اللہ ان کی قبر ٹھنڈی کرے۔ جنت میں اعلٰی مقام عطا فرمائے۔

تحصیل پنڈدادنخان کی سیاست میں بہت سے نام ہیں لیکن ان ناموں ایک نام نوجوان سیاست دان چوہدری عابد اشرف جوتانہ بھی ہیں۔نوجوان پر اعتماد اور سحر سے بھری اس شخصیت کو پنڈدادنخان کا ہر فرد بخوبی جانتا ہے بلکہ پنجاب کی سیاست میں بھی چوہدری عابد جوتانہ کی شخصیت کسی تعارف کی محتاج نہیں ہے۔

چوہدری عابد اشرف جوتانہ کو اگر بحیثیت سیاسی ورکر دیکھا جائے تو یہ عام روایتی سیاست دانوں اور دولت مندوں سے بہت ہٹ کر ہے۔اس کے بدترین مخالف بھی اس بات کو تسلیم کریں گے کہ بے ایمانی اور بد عنوانی جیسی برائیوں سے چوہدری عابد جوتانہ کا دور کا واسطہ بھی نہیں ہے۔نمود و نمائش اور خواہ مخواہ کی پہنچ گیری بھی چوہدری عابد کو نہیں آتی۔تھانے کچہری کی روایتی سیاست سے بیزار یہ شخص سیاست برائے خدمت کا اصول مانتا ہے۔اپنے مخالفوں اور ووٹروں کو تھانے کچہری کی سیاست میں الجھائے رکھنے کا چوہدری عابد جوتانہ سخت مخالف ہے۔

چوہدری عابد کے پاس وہ سب کچھ جو ایک انسان کی خواہش ہو سکتی۔شہرت دولت عزت یہ سب اللہ نے ان سب چیزوں سے چوہدری عابد کو خوب نواز رکھا۔لیکن اس کے ساتھ ساتھ عاجزی کو بھی اس کی شخصیت کا حصہ بنا دیا۔چوہدری عابد کو جہاں تک میں جانتا وہ سیاست میں صرف اور صرف پنڈدادنخان کی پس ماندگی دیکھ کر آیا۔اس کا مقصد تحصیل پنڈدادنخان کے عوام کے لیے کچھ کرنا ہے۔اپنی عوام کو سہولیات دلوانا ہے۔

چوہدری عابد چوہدری فواد کا اس حلقے سے منتخب ہو جانا اس حلقے کے لیے اب بڑی خوش قسمتی سمجھتا ہے اور چوہدری عابد اب زیادہ محترک اس لیے بھی ہیں کہ ان کو لگنے لگا کہ چوہدری فواد کے ساتھ مل کر وہ اس حلقے اور تحصیل کو ترقی کے آسمانوں تک پہنچا سکتے ہیں اور پنجاب کی اس پسماندہ ترین تحصیل کو ناصرف پنجاب بلکہ پاکستان کی ترقی یافتہ ترین تحصیل بنا سکتے ہیں اور یہ سب نا ممکن نہیں کیونکہ چوہدری عابد کے پاس عزم بھی ہے سچائی بھی ہے اور وسائل بھی ہیں اور وہ سیاست میں نام یا مال بنانے نہیں آیا۔ان سب سے اللہ نے اسے پہلے ہی خوب نواز رکھا۔ خدمت کا یہ جذبہ اس کو وراثت میں ملا ہے۔

چوہدری عابد جوتانہ کے والد چوہدری اشرف محروم کی خدمات کو کبھی بھلایا نہیں جا سکتا۔اس علاقے کے لیے۔ یہی خدمت کرنے کا جذبہ چوہدری عابد کی کی وراثت ہے اور پوری تحصیل اور ضلع جہلم، اس بات کا گواہ کہ وہ یہ وراثت خوب نبھا رہا ہے سیاست میں رہ کر بھی اور سیاست سے باہر بھی۔سیاست بھی محض خدمت کے لیے کرتا یہ شخص۔

چوہدری عابد جواتہ اکثر یہ کہتے کہ خدمت کے لیے اقتدار ضروری نہیں اور یہ بات چوہدری عابد جوتانہ ثابت بھی کر چکا۔سادہ سی بات چوہدری عابد اقتدار کی نہیں اقدار اور روایات کی سیاست کا قائل اور یہی سیاست وہ کرتااور تحصیل پنڈدادنخان کے لوگ بھی اب زیادہ بہتر طریقے سے اس کی بات سمجھنے لگے۔کیونکہ اہل پنڈ دادنخان بھی اس روایتی اور تھانے کچہری کی گندی سیاست سے تنگ آ چکے۔وہ چوہدری عابد جیسے سیاست دان کو پنڈدادن خان کے لیے ایک تبدیلی کے طور پر دیکھ رہیں ہیں۔تبدیلی کا وہ سفر جو چوہدری فواد نے شروع کیا۔

چوہدری عابد تبدیلی کے اس سفر کو چوہدری فواد کی قیادت میں آگے لے کر جائیں گے اور بدل دیں گے اس تحصیل کی قسمت کو اور روایت کو کیونکہ پنڈدادن خان کی سیاست روایتی سفید پوشوں ٹاؤٹوں اور دھڑوں بازوں کی متحمل نہیں ہو سکتی۔اس روایتی سیاست کی کمر چوہدری فواد پہلے ہی توڑ چکے۔ رہی سہی کسر چوہدری عابد نکال دیں گے اور پنڈدادنخان کی سیاست اب خدمت کرنے والوں کے ہاتھ میں جا رہی ہے۔اور خدمت میں چوہدری عابد سب سے آگے کھڑا۔

 

 

 

(ادارے کا لکھاری کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔)

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.