کھیوڑہ کی عوام پینے کے پانی سے محروم ،کئی درجن ناجائز کمرشل کنکشن پانی کی فراہمی میں بڑی رکاوٹ

0

کھیوڑہ: کھیوڑہ کی عوام پینے کے پانی سے محروم جبکہ کئی درجن ناجائز کمرشل کنکشن آبادی کو پانی کی فراہمی میں سب سے بڑی رکاوٹ، ایک کمرشل کنکشن کی فیس بھرنے کے لئے لاکھوں روپے مالیت سے بننے والی کئی گلیوں کی تباہ کر کے اس سے مزید 20,20 ناجائز کنکشن کا کاروبار مقامی انتظامیہ کی سربرائی میں چل رہاہے۔ کمرشل بنیادوں پر دیے گئے تمام کنکشن فوری طور پر ختم کر کے عام عوام کو پینے کا پانی مہیا کا جائے ۔ڈی سی جہلم سے ایکشن کا مطالبہ

تفصیلات کے مطابق پاکستان کا منفرد پہچان کا حامل صنعتی اور معدنیاتی سیاحتی علاقہ کھیوڑہ حکومتی عدم دلچسپی کے باعث کھنڈرات میں تبدیل ہو رہا ہے۔ کھیوڑہ کی 70 ہزار سے زائد آبادی کو پانی کی فراہمی کے لیے 07 کلومیٹر دور پنڈدادنخان سے بھاری بجلی خرچ کرکے سپلائی لائن سے واٹر سٹوریج ٹینک تک پانی لایا جاتا ہے جس سے بذریعہ کنٹرول والو آبادی کو غیر منصفانہ طریقے سے کئی کئی ہفتوں کے بعد بمشکل 01 گھنٹہ کے لیے دیا جاتا ہے دوسری جانب بااثر افراد کو 24 گھنٹہ بلا تعطل پانی کی فراہمی کے لیے07 کلومیٹر لمبی مین واٹر سپلائی لائن سے دیے گئے ہیں عوام کی حق تلفی کر کے انہیں پانی جیسی بنیادی ضرورت سے محروم کر رکھا ہے۔

سروے کے مطابق کمرشل کنکشن ہی عام آبادی کو پانی کی فراہمی میں سب سے بڑی رکاوٹ بن گئے۔ایک کمرشل کنکشن کی ماہانہ فیس کی ادائیگی کے لیے 20,20 مزید سب کنکشن نے کروڑوں روپے مالیت کی گلیوں کو تباہ کر دیا ہے اور پانی کامسلسل ضیاع الگ ہے انتظامیہ کی ملی بھگت سے پورا شہر کھنڈر بنتا جارہا ہے جبکہ مین واٹر سپلائی لائن سے ہوٹلوں، گاڑیوں کی دھلائی کے لیے متعدد سروس اسٹیشن ، جپسم فیکٹریوں اور دیگر کھیوڑہ کے علاوہ بااثر لوگوں کو ناجائز کنکشن نے پانی کی عام عوام تک فراہمی کو نایاب کر دیا۔ انتظامیہ کے مؤقف کے مطابق ماہانہ اخراجات پورے کرنے کے لیے کمرشل کنکشن دیے گئے ہیں۔

شہر کے عوامی سماجی حلقوں نے پانی کی غیر منصفانہ تقسیم کوفی الفور ختم کرنے کا عوامی مطالبہ، چیف آفیسر میونسپل کمیٹی کھیوڑہ ، اسسٹنٹ کمشنر پنڈدادنخان، ڈپٹی کمشنر جہلم سمیت آر پی او رراولپنڈی سے کر دیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.