جہلمجلالپور شریفاہم خبریں

للِہ تا جہلم دو رویہ سڑک کی تعمیر روکنے کے لیے قبضہ گروپ متحرک ہو گیا

للِہ تا جہلم دو رویہ سڑک کی تعمیر روکنے کے لیے قبضہ گروپ متحرک، قبضہ کی ہوئی زمینوں کو بچانے کے لیے نقشے سے ہٹ کر غیر ضروری مطالبات کرنے لگے، علاقہ مکینوں نے وفاقی وزیر فواد چوہدری اور وزیر اعظم پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا۔

راجہ حمزہ، چوہدری فاروق گوندل، سید فواد حیدر، چوہدری بشیر، چوہدری اسلم گوندل، چوہدری ارشد چیمہ، مرزا زاہد مغل، مہر احسان، سید سجاد شاہ سمیت جلالپور شریف کے مکینوں نے مشترکہ بیان میں کہا کہ جلالپور شریف پر100 سال سے قبضہ کرنے والے گروپ کا جلالپور شریف کی عوام کو مکمل طور پر تباہ و برباد کرنے کا ایک بڑا منصوبہ تیار کر لیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس قبضہ گروپ نے وزیر اعظم پاکستان کو درخواست دی ہے کہ للِہ تا جہلم بننے والی سڑک کو” بائی پاس” کی بجائے جلالپور شریف کہ اندر سے گزارا جائے تاکہ ان کی دریائے جہلم کہ قریب قبضہ کی ہوئی زمین بچ جائیں۔ اس کے بدلے پورا جلالپور شریف شہر تباہ ہو جائے یہ ان کا مسئلہ نہیں ہے۔

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ سڑک کے جلالپور شریف کے اندر سے گزارنے سے سڑک کے دونوں طرف کی آبادی جس میں ہسپتال، سکول، غریب لوگوں کی رہائش، سو سے زیادہ کاروباری مرکز مکمل طور پر تباہ ہو جائیں گے۔ اس ظلم کے خطرے کی وجہ سے جلالپور شریف کی غریب عوام میں شدید غم اور غصہ پایا جاتا ہے اور ایسے اقدام سے علاقہ میں امن عامہ کا شدید خطرہ پیدا ہو جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان اور ضلعی انتظامیہ سے گزارش ہے کہ جلالپور شریف کو اس تباہی سے بچایا جائے اور اس بڑے قبضہ گروپ کی سازش کو ناکام بنایا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button