دینہ

سربلندی کی تمنا جس کسی شخص کو ہو وہ اللہ کے حضور اپنا سر جھکائے۔ پیر محمد زکریا نعمانی

دینہ: نبی کریم ﷺ کا ارشاد ہے اگر کچھ اور صدقہ خیرات کرنے کو نہ ہو تو کسی مسلمان بھائی کو مسکرا کر مل لینا بھی صدقہ ہے االلہ تعالیٰ پورے صدقے کا ثواب عطا فرماتا ہے۔
ان خیالات کا اظہار خواجہ پیر محمد زکریا نعمانی سجادہ نشین دربارعالیہ ڈھنگروٹ شریف نے معروف کاروباری شخصیت فیصل رحمن اور قیصر رحمن کے والد محترم عبدالرحمن کی تیسری سالانہ برسی پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
انہوں نے کہا کہ آج کے اس دور میں ہر کوئی پریشان ہے پریشانیوں کے اس دور میں اگر آپ کسی سے مسکرا کر ملیں گے تو اس کی پریشانی وقتی طور کے لئے ختم ہو جائے گی اور اسے خوشی ملے گی اور اللہ اس پر آپ سے راضی ہو جائے گا اور برکتیں عطا فرمائے گا یہی خوبی مرحوم میں تھی کہ وہ جب بھی کسی سے ملتے مسکراکر ملتے تھے اور سخاوت سے اس کا استقبال کرتے تھے اور اللہ تعالیٰ سخیوں کو پسند فرماتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ جب آپ سخاوت کا مظاہرہ کریں گے تو اللہ کے نزدیک آپ کا مقام بلند ہو جائے گا اور اللہ آپ کو سر بلندی عطا فرمائے گا سربلندی کی تمنا جس کسی شخص کو ہو اسے چاہیے کہ وہ اللہ کے حضور اپنے سر کو جھکائے جیسے جیسے وہ سر کو اللہ کی بارگاہ میں جھکاتا جائے گا اللہ اس کو سر بلندیاں عطا فرماتا جائے گا اسے عظمتیں عطا فرمائے گا۔
اس کے علاو ہ پیر زکریا نعمانی نے ماں باپ کی عظمت بیان کرتے ہوئے کہا کہ جن کے والدین زندہ ہیںان کے لئے بڑی نعمت ہے کہ وہ ماں باپ کو شفقت کی نظر سے دیکھ کر حج کا ثواب حاصل کر سکتے ہیں دعا کروانا بھی اچھا عمل ہے مگر اپنے ماں باپ کی خدمت کریں تاکہ دل کی گہرائیوں سے آپکے لئے دعا نکلے اور اس دعا کو اللہ ضرور قبول فرماتا ہے اور جن کے والدین اس دنیاِفانی سے جا چکے ہیں انہیں چاہیے کہ وہ ان کی بخشش کے لئے دعا کریں اور ان کے ایصال ثواب کا اہتمام کریں۔
تقریب سے فضل حق رسول نے بھی خطاب کیا اور والدین کی عظمت بیان کی جبکہ نعت رسول مقبول ﷺ محمد بلال قادری نے پیش کی۔
تقریب میں تحریک انصاف کے رہنما فوق شیر باز،ایس ایچ او ایلیٹ فورس چکوال ظفر شکیل ،سابق انچارج چوکی راجہ نیئر ،چوہدری ابرار، چوہدری ضمیر ،صدر دینہ پریس کلب رضوان سیٹھی ،سابق صدر دینہ پریس کلب عرفان محبوب ،محمد افضل، حاجی راؤ عبدالرشید، حاجی فاروق ،لالہ ایوب، رفاقت نعمانی ،حاجی رشید، محمد سعید ،وسیم اعجازسمیت علاقہ بھر کی سیاسی ،سماجی شخصیات کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button