جہلم

بلدیاتی اداروں کے خاتمے کے دوران متعدد اداروں کی ہیت ہی تبدیل ہو گئی

جہلم: بلدیاتی اداروں کے خاتمے کے دوران متعدد اداروں کی ہیت ہی تبدیل ہو چکی ہے اور جہلم سمیت پنجاب کے کئی اضلاع میں بھی میونسپل کمیٹیوں کو کارپوریشن کا درجہ دیا جا چکا ہے ، اسی طرح نصف درجن کے لگ بھگ بلدیاتی اداروں کو ٹاؤن کمیٹیوں میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔

بلدیاتی اداروں کو جب ختم کیا گیا تو اس وقت جہلم سمیت پنجاب کے 36 اضلاع میں ضلع کونسلیں بھی کام کر رہی تھیں مگر نئے نظام میں ضلع کونسل کاوجود ہی ختم کر دیا گیا اور میونسپل کمیٹیوں کی حدود بڑھا کر اس میں ضلع کونسل کے کئی حلقے شامل کر دیئے گئے۔

انتہائی باوثوق زرائع سے معلوم ہواہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں تمام بلدیاتی اداروں کے چیئرمینز بحال ہو گئے ہیں ، مگر عدالت کا تفصیلی فیصلہ آنے کے بعد ہی انہیں کام کرنے میں آسانیاں ہونگی، جہلم کے تمام بلدیاتی اداروں کے سربراہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں کام کرنا چاہتے تھے لیکن تفصیلی فیصلہ نہ آنے کیوجہ سے بلدیاتی نمائندوں کو کام کرنے سے روک دیا گیااور ان کے دفاتر کو سیل کر دیا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ بلدیاتی اداروں کی بندش کے دوران ان کے اثاثوں اور واجبات کی تقسیم کا کام بھی کئی اضلاع میں مکمل ہو چکا ہے ، جس کی بناء پر چیئرمینوں کو اپنے فرائض کی دوبارہ ادائیگی شروع کرنے کیلئے چند روز کے لئے ممکنہ طور پر دشواریوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے کیونکہ نئے نظام کے تحت ضلع کونسلز ختم کرکے ان کی جگہ تحصیل کونسلز قائم کر دی گئیں تھیںاور ملازمین کو بھی دوسرے اداروں میں ضم کر دیا گیا تھا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button