کھیوڑہاہم خبریں

ڈبل شاہ فراد کیس، متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ، FIA نے تحقیقات کا آغاز کر دیا

پنڈدادنخان: ڈبل فراڈ کیس، متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ، ایف آئی اے سائبر کرائم نے تحقیقات کا آغاز کر دیا، رقم 50 کروڑ تک پہنچنے کے اشارے، سائبر کرائم نے گزشتہ رات راجہ ثاقب کی فیملی سمیت اسکے فرنٹ مین سے پوچھ گچھ کی، راجہ ثاقب کے فرنٹ مین کے گھر سے موبائل فون لیب ٹاپ قبضے میں لے لیا گیا، اہم انکشافات متوقع

تفصیلات کے مطابق کھیوڑہ شہر کی تاریخ کا سب سے بڑا مالیاتی سکینڈل سامنے آنے کے بعد متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور ایک اندازے کے مطابق یہ تعداد سینکڑوں میں پہنچ سکتی ہے، پچاس ہزار سے لے کر ڈیڑہ کروڑ روپے تک انویسٹ کرنے والے خواتین و حضرات کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔

ایف آئی اے سائبر کرائم نے گزشتہ رات راجہ ثاقب کی فیملی اور اسکے فرنٹ مین سے ابتدائی پوچھ گچھ کی اور پنڈدادنخان سے راجہ ثاقب کے فرنٹ مین کا موبائل فون اور لیب ٹاپ قبضے میں لے لیا، مزید تفتیش کیلئے سوموار کو طلب کر لیا گیا ہے جبکہ دوسری طرف معمولی سکول ماسٹر کروڑوں روپے کا چونا لگا کر غائب ہونے والے راجہ ثاقب کی تلاش شروع کر دی ہے۔

ذرائع کے مطابق فراڈ کی رقم ساتھ سے ستر کروڑ روپے بتائی جاتی ہے جو مبینہ طور پر منی لانڈرنگ کے ذریعے ملائشیا بھجوانے کا شک کیا جا رہا ہے کیونکہ راجہ ثاقب نے 18 جون کو ارجنٹ پاسپورٹ اپلائی کیا جس کی وصولی کی تاریخ 24 جون ہے۔

راجہ ثاقب کی عیاری اور چالاکی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ وہ ورلڈ آف فارمکس کمپنی کے لیٹر ہیڈ پر صرف رسید جاری کرتا تھا تاکہ پکڑے جانے کی صورت میں کوئی ثبوت نہ ہو۔ مزید انکشافات کا سلسلہ جاری ہے ۔

متاثرین کی بڑی تعداد نے تحقیقاتی اداروں سمیت وزیر اعظم پاکستان وزیر داخلہ وفاقی وزیر چوہدری فواد حسین سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ راجہ ثاقب کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے اور ہماری رقم واپس کرائی جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close