القادر یونیورسٹی بننے سے پہلے ہی متنازعہ ہو گئی، اراضی متنازعہ نکلی، عدالت نے یونیورسٹی کی تعمیر روک دی

0

سوہاوہ: القادر یونیورسٹی بننے سے پہلے ہی متنازعہ ہو گئی، یونیورسٹی تعمیر سے قبل ہی اسکی اراضی متنازعہ نکلی، عدالت نے یونیورسٹی کا کام روک کر 20 اپریل کو جواب طلب کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے سوہاوہ میں نجی یونیورسٹی کے قیام کا اعلان کیا جس کے بعد بکڑالہ کے قریب خریدی گئی زمین پر جب کام شروع ہوا تو ملحقہ زمین مالکان نے یونیورسٹی کے لیے مختص جگہ کو اپنی ملکیت ظاہر کر دیا۔

راجہ سطان سکندر جو کہ اس رقبے کا مالک ہے اس نے عدالت سے رجوع کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ یونیوسٹی کا کام میری زمینوں سے شروع کیا گیا ہے جو کہ میری وراثتی جائیداد ہے عدالت نے ذریعے 20 اپریل تک حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے 20 تاریخ کو جواب طلب کر لیا۔

مدعی راجہ سکندر کے مطابق اس کی یہ اراضی 34 کنال 18 مرلے ہے جبکہ یونیورسٹی کے لیے مختص جگہ ملحقہ ہے لیکن میری زمینوں پر بھاری مشینری لگا کر کام شروع کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ دوروز قبل عمران خان نے سوہاوہ میں یونیورسٹی بنانے کا اعلان کیاتھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.