ہم بحیثیت قوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کر رہے ہیں لیکن بحیثیت مسلم اُمہ ہمارا اظہار نہیں ہے، امیر عبدالقدیر اعوان

0

دینہ: ہم بحیثیت قوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کر رہے ہیں لیکن بحیثیت مسلم اُمہ ہمارا اظہار نہیں ہے ہمارے احتجاج میں کہیں بھی اسلام کا نام نہیں ہے یاد رہے اسلام ہی اس با ت کی بنیاد ہمیں عطا کرتا ہے کہ ہم مظلوم کا ساتھ دیں اور ظالم کے ہاتھ روکیں اور اس کے لیے واحد راستہ جہاد کا راستہ ہے جس کا تعین حکومت وقت اور اُن مقتدر اداروں نے کرنا ہے جن کے پاس اس کا اختیا ر موجود ہے ،مسلمانوں کے گرتے ہوئے خون کے ایک ایک قطرے کا حساب عام آدمی سے لے کر حکومت وقت تک ہر ایک کو دینا ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان نے اجتماع کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ جب اسلام کو اپنانا ہے تو پھر اس کے ہر رکن پر عمل ضرور ی ہے ،اس میں جہاد بلسیف بھی ہے اور اس میں دی ہوئی جان بندہ کو درجہ شہادت دے جاتی ہے جو کہ اس طرح زندہ ہے کہ اسے رزق دیا جاتا ہے آج ہم اگر غور کریں تو اسلامی حکومت نے دنیا میں مظلوموں کا ساتھ دیا۔

انہوں نے کہا کہ راجہ داہر کی حکومت کو محمد بن قاسم نے ایک بیٹی کی آواز پر شکست دے کر اسلام کی حکومت قائم کی ،آج کشمیر پر کئی روز سے کرفیو نافز ہے اور ان کے اوپر اس طرح کے مظالم ڈھائے جا رہے جن کا اندازہ کرنا ہی نا ممکن ہے ،اُن کی عزتوں کا پامال کرنا سے لے کر غذاء ،دوااور دیگر مصائب جن کا کوئی سوچ نہیں سکتا ہے وہ وہاں پر ڈھائے جا رہے ہیں ،اللہ کریم ہمارے ان بہن بھائیوں پر رحم فرمائے انھیں ان تکالیف سے نجات عطا فرمائے اور ہمیں بحیثیت امت اور بحیثیت پاکستانی قوم وہ غیر ت ایمانی عطا فرمائے جس کا تقاضا اس وقت ہے اور اس کی ضرورت ہے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.