جہلم

پنجاب فوڈ اتھارٹی شہریوں کو ہوٹلوں سے معیاری کھانوں کی فراہمی یقینی بنانے میں بری طرح ناکام

جہلم: پنجاب فوڈ اتھارٹی شہریوں کو ہوٹلوں سے معیاری کھانوں کی فراہمی یقینی بنانے میں بری طرح ناکام،جرمانوں سے ریونیو اور افسران کو سب اچھا کی رپورٹیس دینے سے حالات بہتر ظاہر کرنے کی ناکام کوششیں جاری ، ڈسٹرکٹ فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران صارفین کو مطمئن کرنے میں ناکام ہو گئے ہیں۔

جہلم شہر اور گردونواح میں قائم چھوٹے بڑے درجنوں ہوٹلوں اور ریڑھیوں پر کھانے فروخت کرنے والوں نے حفظان صحت کے اصولوں کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے اپنے کارروبار چمکا رکھے ہیں۔ روزانہ کی بنیاد پر سجنے والے ہوٹلوں اور فاسٹ فوڈ کی دکانوں پر فروخت ہونے والے کھانوں میں استعمال کئے جانے والے میٹریل کے معیاری ہونے کی تحقیقات تو سروس کے معیاری ہونے کی جانب بھی کوئی توجہ نہیں دی جارہی ۔

کھانوں کے لئے استعمال ہونے والے برتن واضح طور پرپرانی میل سے اٹے ہونا، چھابڑیوں کی کبھی صفائی کرنا یا تبدیل کرنا گوارہ نہیں کیا جاتا۔ گلاس اور پلیٹیں بھی گندے استعمال شدہ پانی میں بھگو کر گندے پانی سے صاف کرکے دوبارہ استعمال کیلئے پیش کردیئے جاتے ہیں۔پینے کیلئے فراہم کیا جانے والا پانی بھی کیمیکل والے ڈرموں میں سٹور کیاجاتا ہے جس میں سے پانی نکالنے کیلئے ٹیبل جگ کو بار بار ڈرم اور ٹینکیوں میں استعمال کیا جاتا ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ڈسٹرکٹ فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران سب اچھا ہے کی رپورٹیں دینے اور ریونیو میں اضافہ کی غرض سے چھوٹے ہوٹلوں کے مالکان کو جرمانے تو کرتے ہیں مگر صفائی کے انتظامات کے حوالے سے کوئی بہتری نظر نہیں آرہی ۔

شہریوں نے ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع جہلم میں تعینات ڈسٹرکٹ فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران کو روزانہ کی بنیاد پر جہلم شہر و گردونواح میں قائم ہوٹلوں کا معیار اور ملازمین کے ہیلتھ سرٹیفکیٹ چیک کرنے کے ساتھ ساتھ صفائی ستھرائی کے انتظامات چیک کرنے کا پابند بنایا جائے تاکہ شہری موذی امراض سے محفوظ رہ سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button