جہلم

محکمہ معدنیات اور ٹھیکیداروں کی ملی بھگت، دریائے جہلم سے غیر قانونی طور پر ریت نکالنے کا سلسلہ جاری

جہلم: محکمہ معدنیات اور ٹھیکیداروں کی ملی بھگت، دریائے جہلم شہر کے مختلف مقامات سے غیر قانونی طور پر ریت نکالنے کا سلسلہ جاری،دریا کے اندر بند بنا کر پانی کا رخ شہری آبادی کی جانب موڑ دیا گیا،ریت نکالنے سے دریا کے اندر کئی کئی فٹ گہرے گڑھے بن گئے،دریا کا ایک حصہ خشک ہونے کی بناء پر بااثر افراد نے قبضے جما لئے ،شہری علاقوں میں ریت لے جانیوالی ٹریکٹر ٹرالیوں کی آمدورفت سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا،حادثات معمول بن گئے۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ معدنیات کے افسران و عملہ کی سرپرستی میں بااثر افراد نے دریا کے کناروں سے ریت نکالنے کا شروع کر رکھا ہے ، جس کیوجہ سے دریا کے کناروں کے قریب خوفناک گہرے گڑھے بن چکے ہیں جہاں نہانے والے معصوم بچوں کے ڈوبنے سے متعدد اموات بھی واقع ہو چکی ہیں۔

محکمہ معدنیات کے افسران و اہلکاروں کی ملی بھگت کیوجہ سے ٹریکٹر ٹرالیوں پر ریت نکال کر اندرون شہر فروخت کیا جارہی ہے، دریا کناروں سے نکالی جانے والی ریت کیوجہ سے کناروں کے ساتھ گہرے گڑھے بن رہے ہیں جس کیوجہ سے آئے روز نہانے والے بچے ڈوب کر زندگی کی بازیاں ہار رہے ہیں۔

شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب ، سیکرٹری معدنیات سے مطالبہ کیاہے کہ جہلم فرض شناس ، ایماندار افسران و اہلکاروں کو تعینات کیا جائے تاکہ لوٹ مار کا خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button