جہلم

بڑھتی ہوئی مہنگائی نے مزدور طبقہ کا جینا دشوار کر دیا

جہلم: بڑھتی ہوئی مہنگائی نے مزدور طبقہ کا جینا دشوار کر دیا ، محکمہ لیبر کی عدم دلچسپی سے مزدور طبقہ کی حکومت کی جانب سے اعلان کردہ کم از کم ماہانہ اجرت 17 ہزار پر عمل درآمد نہ ہو سکا، فیکٹری مالکان کی جانب سے مزدوروں کی محکمہ سوشل ویلفیئر میں رجسٹریشن نہ کروانے پر مزدوروں کو ریلیف نہ ملنے سے مزدوروں میں تشویش پائی جاتی ہے۔
ان خیالات کا اظہار لیبر لیڈر پنجاب پی ڈبلیو ڈی ایمپلائز یونین کے مرکزی نائب صدر و زونل سیکرٹری حاجی محمد افضل بلوچ نے مزدوروں کو ان کے حقوق دلانے کے حوالے سے اخبار نویسوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔
انہوںنے کہا کہ ضلع بھرمیں فیکٹری مالکان فیکٹریوں میں کام کرنے والوں مزدوروں کی نہ ہی محکمہ سوشل ویلفیئر اور نہ ہی لیبر ڈیپارٹمنٹ میں رجسٹریشن کرواتے ہیں اور نہ ہی حکومت کی طرف سے کم از کم ماہانہ اجرت 17 ہزار پر عملدرآمد کرنے کے لئے تیار ہیں جس کیوجہ سے 60 سال سے زائد عمر کے مزدوروں کو سوشل ویلفیئر میں رجسٹریشن نہ ہونے سے انکو کسی قسم کی پنشن اور گرانٹ نہیں مل رہی جو محنت کشوں کے ساتھ سخت ناانصافی ہے۔
حاجی محمد افضل بلوچ نے وزیراعظم پاکستان ، چیف جسٹس آف پاکستان ، وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ مزدوروں کے حقوق دلوانے میں کردار ادا کریں تاکہ غریب محنت کش اپنے بچوں کو 2 وقت کی روٹی مہیا کر سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button