جہلم

شوگر مافیا کامیاب، رمضان المبارک کے آغاز پر جہلم شہر کے بازاروں میں چینی سستی ممکن نہ ہوسکی

جہلم: رمضان المبارک کے آغاز پر جہلم شہر کے بازاروں میں چینی سستی ممکن نہ ہوسکی، شوگر مافیا کامیاب، ضلعی انتظامیہ 84 روپے فی کلو چینی فروخت کروانے میں مکمل طور پر ناکام ، چینی 100 سے105 روپے فی کلو فروخت ہورہی ہے ، برائلر مرغی کا گوشت 370 روپے کا 800 گرام جبکہ لیموں بھی 400 روپے فی کلو فروخت ہوتے رہے۔

تفصیلات کے مطابق شہرکے بازاروں میں چینی سرکاری نرخوں پر فروخت ہونے کی بجائے 105 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت کی جارہی ہے جبکہ برائلر مرغی کے گوشت کے نرخ شہر میں 370 جبکہ ملحقہ آبادیوں میں 400 روپے 800 گرام کے حساب سے فروخت کیا جاتا رہا، اسی طرح دیسی لیموں کا سرکاری ریٹ 330 روپے مقرر کیا گیا جبکہ شہر کے دکاندار 400 اور ملحقہ آبادیوں میں 450 روپے فی کلو فروخت تک فروخت ہو رہے ہیں ۔

اس حوالے سے شہریوں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ضلعی انتظامیہ اخباری بیانات کی حد تک محدود ہو کر رہ گئی ہے ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غائب ہیں ، دکانداروں نے من مرضی کے نرخ مقرر کرکے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ کر رکھا ہے ۔ حکومتی مشینری فیل ہو چکی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دودھ فروخت کرنے والے دکانداروں نے ماہ صیام کو مدنظر رکھتے ہوئے دودھ ، دہی کی قیمتوں میں بھی اضافہ کرکے شہریوں کی جیبوں کا صفایا کرنا شروع کررکھا ہے ،سحری و افطاری میں چینی ، دودھ دہی دسترخوان کا لازمی جزو ہے۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر/ ایڈمنسٹریٹر میونسپل کارپوریشن سے مطالبہ کیاہے کہ سرکاری نرخوں پر اشیاء خوردونوش کی فروخت پر یقینی بنایا جائے تاکہ ماہ رمضان میں غریب ،سفید پوش طبقہ اپنے بیوی بچوں کو 2 وقت کی روٹی مہیا کر سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button