کشمیر سے ہمارا خون اور ایمان کا رشتہ ہے، مسئلہ کشمیر کو صرف علاقائی تناظر میں نہ دیکھا جائے۔ سید ذیشان حیدر

0

پڑی درویزہ: کشمیر سے ہماراخون اور ایمان کا رشتہ ہے ۔مسئلہ کشمیر کو صرف علاقائی تناظر میں نہ دیکھا جائے، مودی سرکار نے بلا وجہ کشمیر کی قانونی حیثیت کو تبدیل کر کے دنیا بھر کے لیے مسئلہ پیدا کر دیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار سابق چیئر مین یونین کونسل پھلرے سیداں تحصیل سوہاوہ سید ذیشان حیدر نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو صرف بر صغیر پاک و ہند کے حوالے سے علاقائی تناظر میں نہ دیکھا جائے کیونکہ یہ ایک بین الاقوامی سطح کادیرینہ مسئلہ ہے۔ جہاں تک کشمیر اور پاکستان کے عوام کا تعلق ہے۔

سید ذیشان حیدر ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ کشمیری مسلمانوں اور پاکستانی عوام کا خون اور ایمان کا رشتہ ہے بلکہ گوشت اور ناخن کا رشتہ بھی کہا جائے تو غلط نہیں ہو گا ۔ وہ گزشتہ روز مسئلہ کشمیر کی صورت حال پر صحافیوں سے باتیں کر رہے تھے ۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کی یہ بات کہ جنگ سے مسائل حل نہیں ہوتے اپنی جگہ درست لیکن بعض اوقات مسائل کا حل ہی اصل میں جنگ ہوتی ہے ہمیں تاریخ سے سبق سیکھنا ہو گا ہمیں جرمنی کی تاریخ کو دیکھنا چاہیے تین جنگوں کے بعد ایک متحدہ جرمنی معرض وجود میں آیا تھااسی طرح ٹیپو سلطان جیسے مسلمان رہنماؤں کی تاریخ کو دیکھنا ہو گا ۔ جہاں تک مذاکرات کا تعلق ہے۔

سید ذیشاں حیدر ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ عدالتوں کے دیوانی مقدمات اور بین الاقوامی اصولوں کے مذاکرات ایک برابر محسوس ہوتے ہیں سابق اقوام متحدہ کی قرار دادوں کو منظور ہوئے آج ستر سال ہو گئے ہیں آج تک شاطر انڈیا نے متنازعہ کشمیر میں ریفرنڈم تک نہیں کروایا کیونکہ نوشتہ دیوار اس کے سامنے ہے ۔ آج حکومت پاکستان کو اعلیٰ ادراک کا مظاہرہ کرتے ہوئے بر وقت اور درست فیصلوں میں دیر نہیں کرنی چاہیے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.