جہلم

یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن کا 1 لاکھ روپے سے کم ماہانہ سیل والے سٹوروں کی بندش کا فیصلہ

جہلم: یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن نے جہلم سمیت ضلع بھر میں درجنوں 1لاکھ روپے سے کم ماہانہ سیل والے سٹوروں کی بندش کا فیصلہ کر لیا ہے ،ضلع بھر میں قائم درجنوں سے زائد یوٹیلیٹی سٹورز میں اس وقت متعدد سٹورز خسارے کا شکار ہیں صرف چندسٹورز منافع بخش ہیں اور کارپوریشن کو لاکھوں ، کروڑوں روپے کا خسارہ برداشت کرنا پڑ رہا ہے۔

یوٹیلیٹی سٹور ز کارپوریشن کی جانب سے جاری ہونے والی دستاویزات کے مطابق اس وقت ضلع جہلم کی چاروں تحصیلوں میں مجموعی طور پر درجنوں سے زائد سٹورز کا نیٹ ورک موجود ہے جس کے ساتھ ساتھ فرنچائز سٹورز بھی کام کر رہے ہیں ان سٹورز میں سب سے زیادہ جہلم شہر اور مضافاتی علاقوں میں کام کر رہے ہیں۔

دستاویزات کے مطابق اس وقت زیادہ تر سٹورز نقصان میں جارہے ہیں ،جن کی سیل ماہانہ 1 لاکھ روپے سے کم ہے جن میں بیشتر سٹور مضافاتی علاقوں میں قائم ہیں، جس کے پیش نظریوٹیلیٹی کارپوریشن کی انتظامیہ ایک لاکھ روپے سے کم ماہانہ سیل کرنے والے سٹورز کی بندش کی منصوبہ بندی کر رہی ہے تاکہ ماہانہ لاکھوں روپے کے خسارے کو کم کیا جا سکے۔

ریکارڈ کے مطابق اس وقت کارپوریشن کے ریگولر ملازمین کی تعداد ضلع بھر میں درجنوں سے زائد ہے ،جبکہ کنٹریکٹ ملازمین کی خاصی تعدادسٹوروں پر کام کر رہی ہے ، اس وقت مجموعی طور پر کارپوریشن کے پاس گریڈ 9سے لیکر گریڈ 2تک کے مختلف کیڈر میں ملازمین سرپلس ہیں۔

اس حوالے سے مزدور تنظیموں کے عمائدین کا کہنا ہے کہ موجودہ حکمران محنت کشوں کے چولہے ٹھنڈے کرنے کی ٹھان چکے ہیں، پڑھے لکھے نوجوانو ں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کی بجائے سرکاری اداروں میں خدمات سر انجام دینے والے نوجوانوں سے نوکریاں چھین کر بے روزگار کیا جا رہاہے جو کہ سوچی سمجھی سازش ہے۔

سٹووروں میں مال فراہم کرنا انتظامیہ کا کام ہوتا ہے اگر انتظامیہ ہی ان سٹوروں پر مقررہ وقت پر معیاری اشیاء خوردونوش فراہم نہیں کی جاتیں جس کیوجہ سے سٹور خسارے میں جارہے ہیں ، حکمران خسارے کا بہانا بنا کر محنت کشوں سے روز گار چھیننے پر تلی ہوئی ہے جو کہ محنت کشوں کے ساتھ بہت بڑی ناانصافی ہوگی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button