جہلم

نئی بھرتی نہ ہونے کی وجہ سے محکمہ تعلیم میں اساتذہ کی سینکڑوں آسامیاں تقرری کی منتظر

جہلم: ضلع بھر میں گزشتہ ڈیڑھ سال سے نئی بھرتی نہ ہونے کی وجہ سے محکمہ تعلیم میں اساتذہ کی سینکڑوں آسامیاں تقرری کی منتظر ، جس کیوجہ سے ضلع بھر کے طالب علموں کا تعلیمی نقصان ہو رہاہے تو دوسری طرف نئی بھرتی نہ ہونے کیوجہ سے بیروزگاری میں اضافہ ہوتا جا رہاہے اور پڑھے لکھے نوجوانوں میں بے چینی اور تشویش پائی جاتی ہے۔
حکومت کی جانب سے 1 کروڑ نوکریاں دینے کا نعرہ اب محض خواب بنتا جا رہاہے اور پڑھے لکھے نوجوان بیروزگاروں کی تعداد میں دن بدن تیزی کے ساتھ اضافے سے یہ بات عیاں ہوتی جارہی ہے کہ گزشتہ حکومتوں کی طرح موجودہ حکومت کی ترجیحات میں بھی تعلیم شامل نہیں یہی وجہ ہے کہ ایک سال کا عرصہ گزرجانے کے باوجود حکومت نے نئے اساتذہ کی بھرتیاں ابھی تک نہیں کیں۔
شہر کی سماجی رفاعی فلاحی ،مذہبی و شہری تنظیموں کے عمائدین نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اساتذہ کی خالی آسامیوں پر نئے اساتذہ کی بھرتی کی جائے تاکہ پنجاب بھر کے طالبعلموں کو مزید تعلیمی نقصان سے بچایا جا سکے اور پڑھے لکھے نوجوانوں کو روزگار میسرآسکے ، جس سے ملک میں بڑھتی ہوئی بے روزگاری پر قابو پایا جا سکے۔
انہوں نے کہا کہ سکول ایجوکیشن کو بلدیاتی اداروں کے حوالے کرنے سے تعلیمی ادارے نہ صرف سیاسی اکھاڑہ بن جائیں گے بلکہ ہمارے رہے سہے تعلیمی نظام کا جنازہ بھی نکل جائے گا، تمام اساتذہ تنظیمیں متحد ہو کر اس سازش کو ناکام بنائیں گے ۔ تعلیمی اداروں کو بلدیات کے حوالے کرنے سے گلی گلی میں تعلیمی افسران پیدا ہو جائیں گے اور تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق ہو جائے گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button