جہلماہم خبریں

سال 2019 بھی گزر گیا؛ بلدیاتی اداروں کے نمائندگان کے لئے مثبت تبدیلی نہ آ سکی

جہلم: 2019 بلدیاتی اداروں کے نمائندگان کیلئے مثبت تبدیلی نہ لا سکا۔ چیئر مینز، جنرل کونسلرز اختیارات سمیت فنڈز سے محروم رہے ،شہری عوامی مسائل حل کرنے کا مسلسل مطالبہ کرتے رہے۔
ضلع جہلم کی44یونین کونسلز ، 5 میونسپل کمیٹیوں جن میں جہلم ، دینہ ، سوہاوہ ، پنڈدادنخان ، کھیوڑہ شامل تھے کے بلدیاتی نمائندوں سمیت شہری سال 2019 میں شدید محرومیوں کا شکار رہے، اسی طرح عوام کے منتخب نمائندے جنرل کونسلرز سابق حکومت کے دور سے لے کر تبدیلی سرکار کے منتخب ہونے تک اپنے بنیادی حقوق سے مسلسل محروم رہے۔
عوام اپنے منتخب نمائندوں سے اپنے مسائل کے حل کے لیے مطالبے کرتے دکھائی دیئے لیکن بے اختیارت ،فنڈز سے محروم جنرل کونسلرز، سابق حکمران اور تبدیلی سرکار کی طرف اس امید سے دیکھتے رہے کہ ریاست مدینہ میں سابق حکومت کی طرف سے ہونے والی زیادتیوں کا ازالہ ہوسکے گا اور عوام کے منتخب نمائندوں کو عوام کے مسائل حل کر نے کے لیے باقاعدہ اختیارات اور فنڈزملے گے، لیکن سابق حکومت اور تبدیلی سرکار منتخب بلدیاتی نمائندوں کو طفل تسلیوں کے علاوہ کچھ نہ دے سکی ۔
عوامی بلدیاتی نمائندے بے بسی کی تصویر بنے نئے سال میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے ایک بار پھر امیدیں وابستہ کرکے انتظارمیں بیٹھے ہیں کہ ریاست مدینہ میں عوام کے منتخب نمائندوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کا ازالہ ہو سکے گا اور انہیں اختیارات سمیت فنڈز سے نوازا جائے گا تاکہ عوام کے سالہا سال سے چلے آئے مسائل کا حل ان کی دہلیز پر کیا جاسکے گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button