جہلم

انتظامیہ کی عدم دلچسپی کے باعث جہلم میں موجود شہر خاموشاں کی تعمیر کا منصوبہ فائلوں میں دب کر رہ گیا

جہلم: انتظامیہ کی عدم دلچسپی کے باعث شہر میں موجود شہر خاموشاں کی تعمیر کا منصوبہ فائلوں میں دب کر رہ گیا، دوسری طرف شہر کے وسط میں واقع مرکزی قبرستان میں آوارہ جانوروں کا راج، میونسپل کمیٹی کی انتظامیہ کنٹرول کرنے میں مکمل طور پر ناکام ، قبروں میں جابجا سوراخ اس امر کی نشاندہی کر رہے ہیں کہ مردوں کی باقیات کی بے حرمتی بھی روزانہ کا معمول بن چکی ہے یہی نہیں اپنے عزیزوں کی قبروں پر ایصال ثواب کیلئے آنیوالوں کو بالخصوص رینگنے والے کیڑوں مکوڑوں کے کاٹنے کے واقعات بھی باعث تشویش بنے ہوئے ہیں۔

ایڈمنسٹریٹر میونسپل کمیٹی کی ہدایت کے باوجود آوارہ جانوروں کو تلف کرنے کیلئے میونسپل کمیٹی جہلم کی انتظامیہ کی طرف سے کوئی آپریشن شروع نہ ہو سکا جس پر شہریوں نے شدید رد عمل کا اظہار کر تے ہوئے کہا ہے کہ قبرستان کی دیکھ بھال کیلئے بنائی گئی کمیٹی مکمل طور پر غیر فعال ہو چکی ہے اور میونسپل کمیٹی انتظامیہ کووصول ہونیوالے لاکھوں روپے چندہ کا کوئی بھی چیک اینڈ بیلنس نہیں زہریلے کیڑے مکوڑوںکے کاٹنے کے واقعات میں غیر معمولی اضافہ ہو رہاہے۔

ان کیڑے مکوڑوں کیوجہ سے سینکڑوں قبروں میں کھلے سوراخوں سے ظاہر ہوتاہے کہ یہ زمینی حشرات مردوںکی باقیات کا بھی صفایا کرنے میں لگے ہوئے ہیں یہی نہیں آس پاس کی آبادیوں کو بھی اس حوالے سے خطرات لاحق ہیں ، اس سلسلہ میں سابق ڈپٹی کمشنر سے شہریوں نے باضابطہ ملاقات کے دوران تحریری طور پر درخواست پیش کی جس پر تا حال میونسپل کمیٹی کی انتظامیہ کی طرف سے کسی قسم کی کارروائی عمل میں نہیں لا جاسکی۔

شہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب ، کمشنر راولپنڈی، ڈپٹی کمشنر جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ شہر کے مرکزی قبرستان میں جگہ ختم ہو چکی ہے ۔ نئے قبرستا ن کے لئے جگہ خریدی جائے تاکہ نئے شہر خاموشاں میں وفات پانے والوں کو دفن کیا جاسکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button