دینہ

تھانہ منگلا کی حدود میں تھانہ دینہ کے ایس ایچ او کا دھاوا، گن پوائنٹ پر نوجوان کو اغواء کر لیا

دینہ: ڈی پی او جہلم کی آشیرباد یاایس ایچ او دینہ چمک کی زد میں گیا، تھانہ منگلا کی حدود میں واقع گاؤں مدوکالس میں تھانہ دینہ کے ایس ایچ او کی قیادت میں پولیس کا آدھی رات کو دھاوا، چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال، ایس ایچ او نے گن پوائنٹ پر نوجوان کو اغوا کر لیا، گھر میں کھڑی گاڑی کو بھی اپنے ساتھ لے گیا۔دینہ صحافی نے اس واقعہ پر جب ایس ایچ او سے معلومات لینے کی کوشش کی تو ایس ایچ او بدتمیزی پر اتر آیا، یہ میرا تھانہ ہے، ایس ایچ او کی بدکلامی۔
تفصیلات کے مطابق چند روز قبل تھانہ منگلا کی حدود میں واقع گاؤں مدوکالس میں آدھی رات کے وقت تھانہ دینہ کا ایس ایچ او مرزا وقاص، چودھری زاہد اکبر کے گھر پولیس نفری کے ہمراہ چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے گھس آیا۔ وجہ یہ کہ زاہد اکبر کا کسی پارٹی سے پیسے کا لین دین کا سلسلہ چل رھا تھا۔ اور ایس ایچ او موصوف چمک کی خاطرپر اپنے تھانے کی حدود بھول گئے۔ چھاپے کے دوران زاہد اکبر تو نہ ملا تو اس کے بیٹے اویس زاہد اور گھر میں کھڑی گاڑی ساتھ لے گئے۔
دوسرے دن دینہ پریس کلب کے جوائنٹ سیکرٹری سینئر صحافی ادریس چودھری نے ایس ایچ او مرزا وقاص سے تھانہ دینہ میں ملاقات کر کے معاملے کی معلومات لینے کے لیے رابطہ کیا تو صاحب بہادر صاف مکر گئے اور نہایت ہی بدتمیزی، تلخ لہجے، غرور وتکبر سے بھری زبان میں بولے اس کو اس واقعہ کاعلم نہیں ہے۔
ساتھ یہ بھی بولا کہ37لاکھ کا معاملہ ہے نہ میں اور نہ ہی میری پولیس موضع مدوکالس میں گئی۔ یہ میرا تھانہ ھے۔ مجھے دھمکیاں نہ دو۔ بعد میں اسی کے تھانے میں پارٹی کے لین دین کے معاملات طے ہوئے اور اسی کے تھانے سے نوجوان اویس زاہد اور گاڑی برآمد ہوئے۔تما م تر حالات سے معلوم ہوتا ہے کہ اغواء کے پیچھے ڈی پی او جہلم شاکر داوڑ کا ہاتھ ہے۔اور چمک کی خاطر یہ آپریشن کیا گیا۔
ادھر دینہ پریس کلب کے عہدے داران ،سینئر صحافی برادری میں مقامی سینئر صحافی ادریس چودھری کے ساتھ ایس ایچ او تھانہ دینہ کے ناروا،ہتک آمیز اور بدتمیزی پر مبنی رویے پر غصہ کی لہر دوڑ گئی۔
دینہ پریس کلب کے صدر رضوان سیٹھی ،امجد محمود سیٹھی، سید توقیر شاہ، حاجی اظہر محمود،اقبال خان، سہیل انجم قریشی و دیگر ممبران نے وزیراعلیٰ پنجاب، آئی پنجاب، آر پی او راولپنڈی سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ منہ زور ایس ایچ او دینہ مرزا وقاص کا لگام ڈالیں اور فوری طور پر اس کو معطل کر کے یہاں سے اس کا تبادلہ کیا جائے بصورت دیگر صحافی برادری سخت لائحہ عمل اختیار کرنے پر مجبور ہو جائے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button