جہلم

ظالم حکمرانوں نے غریبوں سے 2 وقت کی روٹی کا نوالہ بھی چھین لیا ہے۔ راجہ محمد صدیق

جہلم: آزاد کشمیر حکومت کے وزیر بحالیات راجہ محمد صدیق رہنما مسلم لیگ (ن) سیکرٹری خادم حسین کی رہائش گاہ محلہ اسلام پورہ پر اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ظالم حکمرانوں نے غریبوں سے 2 وقت کی روٹی کا نوالہ بھی چھین لیا ہے۔جب سے پی ٹی آئی کی حکومت آئی ہے روزانہ کی بنیاد پر مہنگائی کے کوڑے برسائے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کا ظلم وستم عوام خاموشی سے برداشت کر رہی ہے۔مہنگائی کو کنٹرول کرناہے تو حکومت کے سامنے جرات کا پہاڑ کھڑا کرنا ہوگا۔غریب لوگ متحد ہوجائیں تو پاکستانی حکمرانوں کو ظالمانہ فیصلے کرنے سے روکا جا سکتا ہے ۔ایک طرف کورونا کی وجہ سے کاروبار نہ ہونے کے برابر ہیں تو دوسری طرف غریب 2 وقت کی روٹی کمانے کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں۔

راجہ محمد صدیق نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے دور میں آزادکشمیر اور پاکستان کے رہائشی خوشحال تھے لیکن موجودہ حکومت کی ناقص پالیسوں کی بدولت عوام کے گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑرہے ہیں انہوں نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر کی حکومت نے کٹھن چیلنجز کے باوجود کامیابی حاصل کی اور آج آزادکشمیر میں مسلم لیگ (ن) کے ترقیاتی منصوبے واضح طور پر دیکھے جا سکتے ہیں۔

انہوںنے کہا کہ عوام کو بدترین لوڈشیڈنگ کی عفریت کا سامنا تھا لیکن ہم نے تمام تر مشکلات اور رکاوٹوں کے باوجود وہ منصوبے مکمل کئے جو کئی عشروں سے التوا کا شکار تھے۔ ہماری کارکردگی بعض لوگوں کا خواب بھی نہیں ہو سکتی۔

انہوں نے بتایا کہ ن لیگ کے دورِ حکومت میں بجلی کی پیداوار پر تیزی کے ساتھ کام ہوا ،ن لیگی حکومت نے 5 سال میں وہ کام پایہ تکمیل تک پہنچائے جو 74سالہ دور میں نہیں ہوئے۔

راجہ محمد صدیق کا کہنا تھا کہ آذاد کشمیر حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی ہر ممکن کوششیں کی گئیں، ہم نے ترقی کا سفر شروع کیا جو تواتر کے ساتھ جاری ہے آج پورے آزاد کشمیر میں طرح طرح کے منصوبوں پر کام جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ آمدہ انتخابات میں آزاد کشمیر سے مسلم لیگ ن بھاری اکثریت کے ساتھ کامیاب ہوگی۔

اس موقع پر ملک محمد منیر، سابق کونسلرچوہدری محمد شفیق، راجہ محمد اسلم خان ، چوہدری وسیم، مرزا تنویر، چوہدری محمد ریاض گوندل،خالد محمود، چوہدری عابد محمود، عامرکیانی، عبداللہ، راجہ اعجاز احمدآف دبئی ، محمد الیاس، ساجد محمود، سابق کونسلر نعیم چشتی، منظور احمد، انجینئر اللہ رکھا غوری و دیگر بھی موجود تھے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button