جہلماہم خبریں

سول ہسپتال میں بیڈز کی شدید قلت، سرجیکل وارڈ میں ایک بیڈ پر دو مریض، تیسرا مریض بنچ پر زیر علاج

جہلم: ڈی ایچ کیو ہسپتال میں بیڈز کی شدید قلت، خواتین سرجیکل وارڈ میں ایک بیڈ پر دو مریض، تیسرا مریض بنچ پر زیر علاج، ہسپتال انتظامیہ خاموشی کی چادر تانے خواب غفلت میں۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہرکے واحد ڈی ایچ کیو ہسپتال کی حالت انتہائی ناگفتہ بہ ہو چکی ہے جہاں کروڑوں روپے سے ٹائلیں تو لگا دی گئی ہیں لیکن بنیادی ضروریات کی طرف کوئی دھیان نہیں دیا جارہا ، ہسپتال کے اندر داخل مریضوں کیلئے بیڈز کی قلت انتہائی شدید ہو چکی ہے اور اس وقت سرجیکل وارڈ زنانہ، چلڈرن وارڈ ، گائنی وارڈ میں بیڈز نہ ہونے سے ایک ایک بیڈ پر دو دو خواتین کو دیا گیا ہے ۔

مریض زیادہ ہونے کی صورت میں بعض خواتین کومریض کے اہلخانہ کو بیٹھنے کیلئے دئیے جانے والے بنچوں پر لٹا دیا جا تا ہے ہسپتال کا نرسنگ سٹاف اس صورتحال سے سب سے زیادہ متاثر ہو تا ہے جہاں وہ مریضوں اور اہلخانہ کی سخت باتیں سننے پر مجبور ہے جبکہ ہسپتال کی انتظامیہ نے وارڈز کی صورتحال کی طرف توجہ نہ دینے کا عہد کر رکھا ہے سی او ہیلتھ، ایم ایس، ڈی ایم ایس سمیت تمام اعلی افسران خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔

ایم ایس چوہدری خالد نے اپنے ہسپتال کے تین درجن کے قریب بیڈز چند ماہ قبل منڈی بہاؤالدین ہسپتال کو بھیج دئیے تھے جس کے بعد سے صورتحال بدتر ہو تی جارہی ہے شہریوں نے وزیر صحت پنجاب سے ڈی ایچ کیو ہسپتال کا دورہ کرنے اور سابق حکومت کے دور میں لگائے گئے نااہل افسران کو فوری ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button