مرکزی قبرستان میں گھپ اندھیرے کا راج، قبرستان منشیات فروشوں اور نشئیوں کی محفوظ پناہ گاہ میں تبدیل

0

جہلم: مرکزی قدیمی قبرستان میں گھپ اندھیرے کا راج، قبرستان منشیات فروشوں اور نشئیوں کی محفوظ پناہ گاہ میں تبدیل، سٹریٹ لائٹس کی عدم تنصیب کے باعث جرائم پیشہ عناصر کے ڈیرے ، پیدل چلنے والے شہریوں کے سروں پر خوف کے سائے منڈلانے لگے، قبرستان روڈ پر سٹریٹ لائٹس کی تنصیب کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر کے وسط میں واقع مرکزی قبرستان کے اردگرد سٹریٹ لائٹس کی سہولت نہ ہونے کیوجہ سے شام ہوتے ہیں ،منشیات فروخت کرنے والے نشئی اور جرائم پیشہ عناصر قبرستانوں کا رخ کر لیتے ہیں جہاں پوری رات نشئی نشے میں دھت ہو کر دھمالے ڈالتے ہیں جبکہ جرائم پیشہ عناصر سڑک پر سے پیدل گزرنے والوں کو اپنا شکار بناتے ہیں۔

منشیات کی فروخت کا دھندہ کرنے والے بدنام زمانہ منشیات فروش بھی قبرستان کو محفوظ مقام سمجھتے ہوئے شام کے وقت قبرستانوں کی طرف چل نکلتے ہیں جہاں نشئیوں کو ضرورت کے مطابق منشیات فراہم کی جاتی ہے ، اس طرح پوری رات نشئی اور جرائم پیشہ عناصر قبرستان اور قبروں کا تقدس پامال کرتے ہیں۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ملازمین اس طرف توجہ نہیں دیتے جس کیوجہ سے منشیات کا دھندہ کرنے والوں اور جرائم پیشہ عناصر نے قبرستانوں کو محفوظ پناہ گاہ کے طور پر استعمال کرنا شروع کر رکھا ہے۔

شہریوں نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ شہرخموشاں میں ہونے والی غیر اخلاقی حرکات اور جرائم پیشہ عناصر کے ڈیروں کے خاتمے کے لئے ماتحت عملے کو روزانہ کی بنیاد پر قبرستانوں میں گشت کرنے کا پابند بنایا جائے تاکہ جرائم پیشہ عناصر اور جرائم کا خاتمہ ممکن ہو سکے۔

دوسری جانب شہریوں نے ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ قبرستانوں سمیت ملحقہ سڑکوں پر سٹریٹ لائٹس کی تنصیب کروائی جائے تاکہ شہری بلا خوف و خطر آمدورفت جاری رکھ سکیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.