جہلم پریس کلب کے صحافی علاقائی مسائل کو اجاگر کرکے ان کے حل کیلئے کردار کرتے ہیں۔ سید اکرم حسین شاہ

0

جہلم: جہلم پریس کلب کے صحافیوں کا طرہ امتیاز ہے کہ علاقائی مسائل کو اجاگر کرکے ان کے حل کے لئے کردار کرتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار جہلم پریس کلب کے سابق جنرل سیکرٹری سید اکرم حسین شاہ نے صحافیوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ جہلم پریس کلب کی روایت ہے کہ ہر سال جمہوری عمل مکمل کیا جاتا ہے ، گزشتہ روز جہلم پریس کلب کے انتخابات کے موقع پر صدر چوہدری عابد محمود ، نائب صدر مرزاکفیل بیگ کیفی ، جائنٹ سیکرٹری ملک انجم یوسف ، فنانس سیکرٹری چوہدری کامران اصغر کا بلا مقابلہ منتخب ہونا پریس کلب کے ممبران کا امیدواروں پر اعتماد کا اظہار ہے۔

انہوں نے کہا کہ جہلم پریس کلب کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 4 عہدیدار بلا مقابلہ منتخب ہوئے جبکہ 15 فروری کو ہونے والے انتخابات میں جنرل سیکرٹری کی نشست کے لئے امیدوارمحمد شہباز بٹ بھاری اکثریت سے کامیاب ہونگے، انہوں نے کہا کہ جہلم پریس کلب کے صحافی باشعور ہیں انہیں اچھے برے کی تمیز ہے، کام کرنے اور صحافیوں کے مسائل حل کرنے والے ہی پریس کلب کے عہدیدار ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ پریس کلب ضلع جہلم کی چاروں تحصیلوں کے صحافیوں کا بڑا گھر ہے ، جو انشاء اللہ 15 فروری کے بعد کھول دیا جائیگا۔ چاروں تحصیلوں سے آنے والے صحافیوں کے مسائل کے حل کے لئے جہلم کے صحافی پریس کلب میں موجود ہوا کریں گے تاکہ پڑوسی اضلاع یا تحصیلوں سے آنے والے صحافیوں کے مسائل کو فوری حل کیا جائے ۔

سید اکرم حسین شاہ بخاری نے کہا کہ الیکشن کمیٹی نے انتہائی ایمانداری اور جرات مندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے الیکشن کا انعقاد کیا ، جس پر الیکشن کمیٹی مبارک باد کی مستحق ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نو منتخب صدر منسوخ ووٹوں کو ایگزیکٹوو آرڈر کے تحت بحال کرنے کے احکامات جاری کر سکتے ہیں ،انہوں نے جہلم پریس کلب کے ممبران سے مطالبہ کیاکہ اخبارات اور ٹی وی چینلز کے ساتھ وابستگی اختیار کریں تاکہ انتخابات کے موقع پر ممبران کو مسائل کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

سید اکرم حسین بخاری نے کہا کہ جہلم پریس کلب کے منتخب صدر چوہدری عابد محمود کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ وہ تیسری مرتبہ صدر منتخب ہو رہے ہیں انہیں تمام ممبران کو ساتھ لیکر چلنا ہوگا، سید اکرم حسین بخاری نے کہا کہ 15 فروری کا سورج محمد شہباز بٹ کی کامیابی کی نوید لیکر طلوع ہوگا اور جہلم پریس کلب کے صحافیوں کے مسائل کو حل کیا جائیگا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.