گھریلو کتوں کو بھی دیگر جانوروں کی طرح حفاظتی ٹیکے لگوائے جائیں، لائیو سٹاک

0

پڑی درویزہ: گھریلو کتوں کو بھی دیگر جانوروں کی طرح حفاظتی ٹیکے لگانے کا مطالبہ ۔ اگر کوئی مالک ویکسین کا انتظام کر لے تو محکمہ ٹیکے لگانے کی سہولت فراہم کر سکتا ہے ۔لائیوسٹاک کے اہلکار کی وضاحت ۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ تقریباً ایک ماہ سے صوبہ پنجاب بھر میں یونین کونسل کی سطح پر آوارہ کتوں کو ہلاک کرنے کی مہم جاری ہے جس کے کوئی مخصوص اثرات دکھائی نہیں دے رہے فائدے کی بجائے زیادہ نقصانات کے خدشات موجود ہیں کیونکہ ترتیب شدہ ٹیمیں زیادہ تر رسمی کاروائی کا سہارا لے رہی ہیں ۔ نیز چند گھریلو کتوں میں باولے پن کے شکایات سامنے آئی تھیں ۔ تحقیق کرنے پر انکشاف ہوا کہ گھریلو یا شکاری کتوں کو محکمہ لائیو سٹاک کی طرف سے مہلک بیماریوں سے بچاؤ کے لئے کوئی حفاظتی اقدامات نہیں کیے جاتے ۔

گھریلو کتوں کے بعض مالکان نے سوالیہ انداز میں کہنا ہے جس طرح دیگر گھریلو جانوروں ، گائے ، بیل ، بھینس اور بکریوں تک کو مہلک اور موسمی بیماریوں سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکے لگائے جاتے ہیں اس طرح گھریلو سطح پر پالتو اور شکاری کتوں کو باولے پن جیسی بیماریوں سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکے لگانے کا کوئی انتظام کیوں نہیں ہے ۔ حالانکہ دیگر جانوروں کی طرح ان کا بھی سرکاری طور پر اندراج ہونا چاہیے ۔ اس سلسلے میں محکمہ لائیو سٹاک کے ایک اہلکارنے اپنا نام ظاہر نہ کرتے ہوئے بتایا کہ گھریلو کتوں کو بیماریوں سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکوں کا کوئی پروگرام ان کی ذمہ داری میں شامل نہیں ہے۔ صرف اگر کوئی مالک حفاظتی ویکسین کا انتظام کرلے تو محکمہ کے اہلکاران ٹیکے لگانے کی سہولت فراہم کر سکتے ہیں ۔

اس صورت حال کے پیش نظر علاقہ بھر کے عوامی سماجی حلقوں کی طرف صوبائی سیکریٹری لائیو سٹاک پنجاب سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ جس طرح دیگر گھریلو جانوروں کو بیماریوں سے بچاؤ کے لیے سرکاری طور پر ویکسنیشن کی جاتی ہے اسی طرح حکومت کی طرف سے گھریلو اور شکاری کتوں کو بھی مہلک بیماریوں سے بچاؤ کے لیے سرکاری طور حفاظتی ٹیکوں کے پروگرام شروع کیے جائیں تا کہ یہ بھی دیگر جانوروں کی طرح صحت مند رہ سکیں اور معمولی معیشت کے ’’کتا پال‘‘شائقین کو بھاری قیمتی ویکسین کے اخراجات خود سے برداشت نہ کرنے پڑیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.