جہلم

جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں کوالیفائیڈ پرسن کی غیرموجودگی میں ادویات فروخت کی جانے لگیں

جہلم: شہر سمیت ضلع بھر میں کوالیفائیڈ پرسن کی غیر موجودگی میں ادویات فروخت کی جانے لگیں جو کہ ڈرگ ایکٹ رولز کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے ، شہریوں نے ایسے تمام سٹورز مالکان کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیاہے۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت کے ارباب اختیار سمیت ضلعی انتظامیہ کو علم ہونے کے باوجود ڈرگ انسپکٹر ز میڈیکل سٹورز مالکان کے خلاف کارروائیاں کرنے کی بجائے ڈنگ ٹپاؤ پالیسیوں پر گامزن ہیں جس کیوجہ سے شہریوں کی زندگیاں ناتجربہ کار ملازمین کے باعث خطرات سے دوچار ہیں۔

شہریوںکا اس حوالے سے کہنا ہے کہ اگر میڈیکل سٹورز مالکان سے کوالیفائیڈپرسن کی غیر موجودگی بارے سوال کیا جائے تو وہ دبنگ لہجے میں ڈرگ انسپکٹرصاحبان کو ان کا حصہ پہنچانے کی بات کہہ کر خاموش کر دیتے ہیں ، محکمہ صحت کے ارباب اختیار کو اس بابت جاننے کے باوجود خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ اگر کوالیفائیڈ پرسن کی غیر موجودگی میں ادویات فروخت کی جارہی ہیں اور ان میں ممنوعہ ادویات بھی شامل ہیں جو بغیر ڈاکٹری نسخہ کے فروخت کی جارہی ہیں جس کے استعمال سے نوجوان نسل بے راہ روی کا شکار ہو کر موت کے منہ میں جارہی ہے ۔ جو کہ بہت بڑا سوالیہ نشان ہے۔

شہریوں نے صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد ، سیکرٹری ہیلتھ سے مطالبہ کیاہے کہ شہر سمیت ضلع بھر میں قائم میڈیکل سٹورز مالکان کو تجربہ کار فارماسسٹ تعینات کرنے کا پابند بنایا جائے ، فارماسسٹ کی موجودگی میں مریضوں اور ان کے لواحقین کو ڈاکٹری نسخہ کے مطابق ادویات مہیا کی جائیں ، فارماسسٹ نہ رکھنے والے میڈیکل سٹورز مالکان کے لائسنس منسوخ کئے جائیں تاکہ شہری ناقص و غیر معیاری ادویات کے استعمال سے محفوظ رہ سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button