جہلم

جہلم میں تعینات مختلف سرکاری محکموں کے افسران حکومت کی بدنامی کا باعث بننے لگے

جہلم میں تعینات مختلف سرکاری محکموں کے افسران حکومت کی بدنامی کا باعث بننے لگے، منتخب ممبران قومی اسمبلی کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی ، حکومت کی شہرت کو نقصان پہنچانے کے لئے مختلف سرکاری اداروں کے سربراہان نے لوٹ مار کر بازار گرم کر رکھا ہے ، شہری سراپا احتجاج ، وزیراعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ضلع جہلم میں تعینات مختلف سرکاری اداروں کے افسران نے انتظامیہ کی سرپرستی میں کرپشن لوٹ مار کا بازار گرم کررکھا ہے شہریوں سے دیدہ دلیری کے ساتھ رشوت وصولی کے بعد جائز کام کئے جاتے ہیں جبکہ ناجائز کاموں کے منہ مانگے پیسے وصول کرکے کام انجام دیئے جارہے ہیں جس کیوجہ سے حکومت کی بدنامی کے ساتھ ساتھ منتخب ممبران قومی و صوبائی اسمبلیوں کی شخصیات بھی متاثر ہورہی ہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ سرکاری اداروںکے افسران بذات خود دن 11 بجے کے بعد دفتروں میں پہنچتے ہیں جبکہ ضلع جہلم کی 3 تحصیلوں جن میں تحصیل پنڈدادنخان ، تحصیل سوہاوہ تحصیل دینہ کے دور دراز کے علاقوں سے آنے والے سائلین افسران کی عدم موجودگی کیوجہ سے مایوس گھروں کو لوٹ جاتے ہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان ، وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار جہلم میں نافذ جنگل کے قانون کے خاتمے کے لئے سرکاری محکموں کے افسران کو سرکاری اوقات میں دفتروں کے اندر پہنچنے اور اپنی موجودگی کو یقینی بنانے کا پابند بنائیں سرکاری اداروں میں لوٹ کھسوٹ کرپشن بدعنوانی کے خاتمے کے لئے خفیہ ایجنسیوں کے ذمہ داران کو ڈیوٹیاں سونپی جائیں تاکہ ضلع بھر میں لوٹ کھسوٹ کا خاتمہ ممکن ہو سکے اور شہریوں کی مشکلات میں کمی واقع ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button