سوہاوہ

سوہاوہ کے نواحی علاقہ میں زمین کا تنازعہ شدت اختیار کر گیا، کسی بھی وقت بڑے نقصان کا خدشہ

سوہاوہ: نواحی علاقے پیل مرزا میں زمین کا تنازعہ شدت اختیار کر گیا جو کسی بھی وقت بڑے نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔

پیل مرزا کے رہائشی نواز کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم محمد خان جونیجو نے بے گھر افراد کو رہائشی مکانات الاٹ کیے تھے تب ہمیں بھی دو مکان پیل مرزا میں الاٹ ہوئے تھے چونکہ اب 33 سال گزر چکے خستہ حال ہونے کے باعث چند سال پہلے ہم نے عمارت گرا دی تھی لیکن پلاٹ اب بھی محکمہ مال کے ریکارڈ میں وہاں موجود ہیں جس پر اسی گاؤں کے رہائشی مقصود اور عقیل جو انتہائی بااثر افراد ہیں قبضہ کر کے وہاں جنازہ گاہ بنانے کے لئے کوشاں ہیں جبکہ ہماری زمین کا کیس عدالت میں زیر سماعت ہے۔

نواز کا کہنا ہے کہ اگر کسی بھی طرح زور زبردستی سے ہماری زمین ہتھیانے کی کوشش کی گئی تو ہمیں مجبوراً مزاحمت کرناپڑے گی جس کے نتیجہ میں اگر کوئی جانی نقصان ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری مذکورہ اشخاص پر عائد ہو گی۔

دوسرے فریق مقصود اور عقیل نے میڈیا کو اپنا موقف دیتے ہوئے کہا کہ نواز کا سرے سے اس زمین کے ساتھ کوئی تعلق نہیں محض جعلی اسناد کے بل بوتے پر اور کسی شر پسند عناصر کے ایما پر بلا وجہ جنازہ گاہ کی تعمیر میں رکاوٹ ڈال رہا ہے جو پورے گاؤں کا اجتماعی مفاد ہے حقیقت میں یہ زمین مفید عام ہے اور ہمارے پاس عدالتی فیصلہ بھی موجود ہے پھر بھی ہم کسی طرح کا تصادم نہیں چاہتے اگر نواز کے پاس اس زمین کے حوالے سے کوئی ٹھوس ثبوت موجود ہے تو وہ محکمہ مال سے نشاندہی کروا لے ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہوگا بصورت دیگر جنازہ گاہ کی تعمیر میں رکاوٹ نہ ڈالی جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button