منگلادینہاہم خبریں

دینہ کا رہائشی 45 سالہ شخص اپنے بیٹے کو بچانے کیلئے نہر میں کود گیا، دونوں باپ بیٹا جاں بحق

دینہ کی رہائشی فیملی حادثے کا شکار، نہر اپر جہلم میں 15سالہ بیٹے کو ڈوبنے سے بچاتے ہو ئے باپ بھی ڈوب کر جاں بحق ہو گیا، دونوں باپ بیٹا کے ڈو بنے کے بعد فیملی میں چیخ و پکار مچ گئی، چند گھنٹے بعد والد کو زندہ نکال لیا گیا مگر ہسپتال پہنچ کر دم توڑ گیا، غوطہ خوروں کی مدد سے بیٹے کی لاش کو 20گھنٹے بعد نکال لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق نو ر محلہ دینہ کی رہائشی فیملی محمد ساجد عمر 45 سال اپنی فیملی کے ہمراہ سیرو تفریح کے لئے منگلا نکی کے مقام پر گئے تھے جہاں محمد ساجد کا 15سالہ بیٹا محمد اویس نہر میں پاؤں پھسلنے کی وجہ سے گر گیا، بیٹے کو ڈوبتے ہو ئے دیکھ کر باپ بھی کود گیا، ایک دوسرے کو بچانے کے چکر میں پانی کی تیز لہروں نے دونوں باپ بیٹا کو دبوچ لیا۔

باپ بیٹا کو ڈوبتے ہو ئے دیکھ کر وہاں پر مقامی لو گوں نے بھی چھلانگیں لگا دیں جس سے چند گھنٹے بعد 45 سالہ ساجد کو نکال لیا گیا اور تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا مگر جانبر نہ ہو سکا اور ہسپتال میں دم توڑ گیا۔

بیٹے کی لاش کو کافی تلاش کرنے کے بعد کچھ پتہ نہ چل سکا او ر کافی جدو جہد کے بعد غوطہ خوروں کی مدد سے 20 گھنٹے بعد 15 سالہ اویس کی لاش کو نکال لیا گیا، حادثے کے بعد فیملی میں چیخ و پکار مچ گئی، بچے کی والدہ غم سے نڈھال۔

جاں بحق ہو نے والا 15 سالہ بیٹا محمد اویس 3بہنوں کا اکلو تا بھائی تھا، دونوں باپ بیٹا کی الگ الگ میتیں گھر پہنچنے پر کہرام مچ گیا۔ پورے علاقہ میں سو گ کا عالم ، بچے کے والد کی نماز جنازہ صبح 9 بجے ادا کی گئی جبکہ بیٹے کی نماز جنازہ دن 4 بجے ادا کی گئی ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button