دینہ

دینہ میں قانون نافذ کرنے والے ادارے خود ہی قانون کا مذاق اُڑانے میں مصروف

دینہ میں قانون نافذ کرنے والے ادارے خود ہی قانون کا مذاق اُڑانے میں مصروف۔ اسسٹنٹ کمشنر آفس کے باہرلگا اشتہارـ "سگریٹ نوشی پر پابندی” عوام کو بیوقوف بنانے کے لیے ہے۔ ایسے لگتا ہے صوبائی حکومت کے احکامات صر ف غریب عوام کے لیے ہوتے ہیں آفس میں بیٹھے اہلکار اس سے مستثنیٰ ہیں۔

نئے تعینات ہونے والے اسسٹنٹ کمشنر دفتری ٹائم میں لوگوں کے مسائل حل کرنے کے بجائے بااثر لوگوں سے تعلقات استوار کرنے میں مصروف عمل۔عوامی و سماجی حلقوں کا دفاتر میں دفتر ی اوقات میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے احکامات پر موثر عمل درآمد اور آفیسرز کی غیر ضروری سرگرمیوں اور گپ شپ کانوٹس لینے کامطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی حکومت کادفاتر میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے باوجود دفتری اوقات میں اے سی آفس ، بلدیہ دفتر اور بینکوں سمیت کئی دفاتر میں سکریٹ نوشی کرنا معمول بن گیا۔صوبائی حکومت کے احکامات ہوا میں اُڑا دیے گئے حلانکہ اس کے خلاف ورزی پر جرمانہ و قید کی سزا مقرر ہے۔مگر بد قسمتی سے تحصیل دینہ صوبائی حکومت کے اس حکم پر ابھی تک ایک فی صد بھی عمل درآمد نہ ہو سکا۔

مقامی اسسٹنٹ کمشنر دینہ محمد سلیم راجہ کے دفتر میں کھلے عام سگریٹ نوشی ہونے کے ساتھ بااثر سیاسی افراد کو پروٹوکول دینے اور عام آدمی کے قیمتی وقت کا ضیاع او ر عدم توجہ کی شکایات سامنے آئی ہیں۔جبکہ دفتر کے باہر نو سموکنگ اور اس بلڈنگ میں سگریٹ نوشی پر پابندی کا اشتہار بھی لگا ہے مگر عملی طور پر معاملہ اس کے برعکس ہے۔اس طرح میونسپل کمیٹی دینہ سمیت گردونواح بینکوں،یونین کونسلز،ڈاکخانوں اور دیگر سرکاری دفاتر میں سگریٹ نوشی روزانہ کا معمول بن چکی ہے۔

مقامی عوامی سماجی حلقوں نے ضلعی و صوبائی انتظامیہ سے اس سلسلہ میں فوری موثر کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button