جہلم

گرمیوں کا آغاز ہوتے ہی ہوٹل ورکرز کی طرف سے فوڈ سیفٹی کٹ پہننے میں سستی کی شکایات سامنے آنے لگیں

جہلم: گرمیوں کا آغاز ہوتے ہی ہوٹل ورکرز کی طرف سے فوڈ سیفٹی کٹ پہننے میں سستی کی شکایات سامنے آنے لگیں ، شہریوں کا ڈی جی فوڈ اتھارٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔
تفصیلات کے مطابق گرمی کا آغاز ہوتے ہی مختلف ہوٹلوں میں کام کرنے والے ورکروں نے فوڈ سیفٹی کٹس پہننے میں سستی و کاہلی سے کام لینا شروع کررکھا ہے ، اس حوالے سے شہریوں نے اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ متعدد ہوٹلوں میں کھانے پینے کی اشیاء خوردونوش تیار کرنے والے کاریگروں اور ملازمین کو بالوں کو ڈھانپنے کے لیے ٹوپی، جسم پر ایپرن پہننا ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے لازمی قرار دے رکھا ہے۔
تیارشدہ خوراک کو چھونے والوں کے لیے ہاتھوں پر دستانے پہننا انتہائی ضروری ہے ۔ فوڈ ورکرز کا مکمل کٹ پہننا حفظان صحت کے اولین اصولوں میں سے ایک ہے۔ اس کے برعکس ورکروں نے فوڈ سیفٹی کے عملہ کی ملی بھگت سے بااثر ہوٹل مالکان نے ورکروں کو فوڈ کٹ پہننا ترک کر دیا ہے ،جس سے شہریوں میں موذی امراض پھیلنے کے شدید خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔
شہریوں نے ڈسٹرکٹ فوڈ اتھارٹی سے فوڈ سیفٹی کٹ استعمال نہ کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لینے کا مطالبہ کیاہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button