پنڈدادنخاناہم خبریں

پنڈدادنخان میں محکمہ تعلیم کے افسران و عملہ کی ملی بھگت، پرائیویٹ سکول مافیا بے لگام، والدین سراپا احتجاج

تحصیل پنڈدادنخان میں محکمہ تعلیم کے افسران و عملہ کی ملی بھگت سے پرائیویٹ سکول مافیا بے لگاہو چکا ہے جس سے تحصیل بھر کے علاقوں خصوصاََپنڈدادنخان سمیت کھیوڑہ، ہرن پور، پنن وال، دھریالہ جالپ، ٹوبھہ،بھیلووال، پنڈی سید پور، جلالپورشریف میں پرائیویٹ سکولوں نے پانچ پانچ مرلہ کے مکانات میں سکول بنا کر بڑے بڑے سکولوں کے بورڈ لگا کر عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شروع کر رکھا ہے۔

ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ محکمہ تعلیم کے افسران کی ملی بھگت سے بااثر پرائیویٹ سکول مالکان نے اپنے سکولوں میں اندھیر نگری بنا رکھی ہے جہاں تعلیم یافتہ اساتذہ کو چند ٹکوں پر ملازمت دیکر اْن کا معاشی اور معاشرتی استحصال جاری ہے۔

ایک اندازے کے مطابق تقریباََ 50فیصد تعلیمی اداروں میں فی میل اساتذہ کی عزت و آبرو بھی مجروح ہو چکی ہے جس کی متعدد شکایات محکمہ تعلیم کو ملنے کے باوجود وہ سکولوں کے خلاف کارروائی کرنے سے گریزاں ہے۔ مزیدانکشاف کیاگیا ہے کہ تحصیل پنڈدادنخان میں دکانوں میں سکول اور کالج بنوا دیے جاتے ہیں جہاں پانچ پانچ سالوں تک محکمہ تعلیم کے افسران کی ملی بھگت سے سکول بغیر رجسٹریشن کے چل رہے ہیں اور محکمہ تعلیم کے قوانین و ضوابط کی دھجیاں اْڑا تے ہیں۔

معززین علاقہ اوروالدین نے وزیر تعلیم مراد راس، ڈی سی جہلم راؤ پرویز اختر، چیف ایگزیکٹو آفیسر سے مطالبہ کیا ہے کہ تعلیم جیسے پیغمبری پیشے کے ساتھ کھلواڑ کرنے والے عناصر کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لا کر ان کالی بھیڑوں کے بے نقاب کیا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button