جہلم

جہلم میں صفائی کیلئے ڈی سی کے احکامات ہوا میں اڑ گئے، گلی گلی گندگی، کچرے کے ڈھیر

جہلم: شہر میں صفائی کیلئے ڈی سی کے احکامات ہوا میں اڑ گئے ، گلی گلی گندگی ، کچرے کے ڈھیر، سیوریج لائنیں بلاک ، واٹر سپلائی کے دریا بہنے لگے، ڈپٹی کمشنر حکم جاری کرکے بھول گیا ، صفائی کے عملہ اور سامان ہی دستیاب نہیں تو صفائی کیسے کریں، سینٹری برانچ بلدیہ کا موقف۔

تفصیلات کے مطابق صاف دیہات پروگرام مکمل فیل ہونے کے بعد شہر ی علاقوں میں صفائی کی صورتحال انتہائی ناقص ہو گئی ہے، چند روز قبل ڈی سی جہلم اقبال حسین نے شہری علاقوں میں صفائی یقینی بنانے اور کچرے کے تمام ڈھیر اٹھانے کی ہدایت کی تھی لیکن صفائی کی صورتحال بہتر ہونے کی بجائے بد تر ہوتی جارہی ہے ہر وارڈ ہر گلی محلے میں کچرے کے جابجا ڈھیروں نے بیماریاں پھیلانے کا کام عروج پر پہنچا دیا ہے گلیوں میں خودساختہ فلتھ ڈپو ہر طرف دیکھے جاسکتے ہیں۔شہریوں کی جانب سے بلدیہ جہلم میں دی جانے والی درخواستوں پر بالکل کوئی عمل درآمد نہیں ہوتا ۔

اس حوالے سے بلدیہ کے ایک سپروائزر کا کہنا ہے کہ ہمارے پا س صرف 70کے قریب سینٹری ورکر ہیں سامان نہ ہونے کے برابر ہے افسران عملہ اور سامان تو مہیا نہیں کرتے البتہ رزلٹ شاندار مانگتے ہیں ستر افرا د کے ساتھ شہر بھر کی صفائی کیسے ممکن ہے جبکہ آدھے سے زیادہ ورکر سیاسی ڈیروں پر مستقل لگے ہوئے ہیں ایسے حالات میں صفائی کی صورتحال کیسے بہتر ہوسکتی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button