میڈیکل آفیسر انچارج بی ایچ یو پھلڑے سیداں کو تبدیل نہ کیا گیا تو نقص امن کا مسئلہ پیدا ہو سکتا ہے۔ چوہدری امتیاز احمد

0

پڑی درویزہ : سابق جنرل کونسلر یونین کونسل پھلڑے سیداں چوہدری امتیاز احمد نے کہا ہے کہ اگر میڈیکل آفیسر انچار ج بنیادی مرکز صحت پھلڑے سیداں ڈاکٹر علی ارشد کو فور ی طور پر تبدیل نہ کیا گیا تو نقص امن کی صور ت حال خارج از امکان نہیں ہے ۔ انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہ ڈاکٹر سرکاری اوقات کار کے دوران ہر وقت موبائل گیمز میں مصروف رہتا ہے نیز اگر کوئی مریض بلڈ پریشنر تک بھی چیک کرانا چاہے تو یہ مریضوں کا شوق قرار دیتا ہے ۔

چوہدری امتیاز احمد نے بتا یا کہ اہل پڑی درویزہ کے مطالبہ پر چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ضلع جہلم نے میڈیکل آفیسر انچارج کو دوران ہفتہ دو دن کے لئے کیپٹن عطا اللہ سول ڈسپنسری پڑی درویزہ تعینات کیا ہوا ہے جس کے لئے وہ محکمہ صحت ضلع جہلم کے ممنون ہیں مذکورہ ڈسپنسری میں وہ خود برائے ذاتی طبی معائنہ گئے جہاں ڈاکٹر موصوف مریضوں کو چیک کرنے کی بجائے موبائل گیمز میں مصروف تھے ۔

بطور مریض چوہدری امتیاز احمد نے ڈاکٹر کو بلڈ پریشر چیک کرنے کی استدعا کی تو ڈاکٹر علی ارشد کا کہنا تھا کہ ’’آج کل بلڈ پریشر چیک کرانا مریضوں کا شوق بن چکا ہے ‘‘جو بطور ڈاکٹر زیب نہیں دے سکتا اسی طرح بنیادی مرکز صحت پھلڑے سیداں میں مذکورہ ڈاکٹر کے متعلق بہت سی شکایات موجود ہیں ۔

سابق جنرل کونسلر یونین کونسل پھلڑے سیداں چوہدری امتیاز احمد اور دیگر عوامی سماجی حلقوں نے مشترکہ طور پر چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ضلع جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ جتنا جلد ممکن ہو مذکورہ ڈاکٹر کو بی ایچ یو پھلڑے سیداں سے تبدیل کیا جائے ورنہ ڈاکٹر کے رویے کے وجہ سے ہسپتال یا کیپٹن عطا اللہ سول ڈسپنسری پڑی درویزہ میں نقص امن کی صورت حال پیدا ہونے کا خدشہ خارج از امکان نہیں ہے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.