جہلم

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو جواز بنا کر جہلم میں مہنگائی کا نیا سونامی داخل، شہری سراپا احتجاج

جہلم: پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں اور مارکیٹ کمیٹی کی مبینہ ملی بھگت ، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو جواز بنا کے مہنگائی کا نیا سونامی داخل ،پھلوں اور سبزیوں کی من مانی قیمتیں وصول کی جانے لگیں ، شہری سراپا احتجاج ، انتظامیہ سب اچھا ہے کا راگ آلاپنے میں مگن ہے۔
تفصیلات کے مطابق جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں پھلوں اور سبزیوں کی قیمتوں میں 30سے 50فیصد خود ساختہ اضافہ کر کے اشیاء ضروریہ فروخت کی جارہی ہیں ،پرائس کنٹرول مجسٹریٹس ، ضلعی انتظامیہ بند کمروں میں اجلاس اور فوٹوسیشن تک محدود ہو کر رہ گئی ، ضلعی انتظامیہ ، مارکیٹ کمیٹی اپنے ہی جاری کردہ نرخوں پر عملدآمد کروانے میں بری طرح ناکام ہو گئی۔
گزشتہ روز مارکیٹ کمیٹی نے ٹماٹر کی سرکاری قیمت 130روپے فی کلو گرا م مقرر کر رکھی تھی دکاندار 180 روپے فی کلوفروخت کرتے رہے ، گاجر 30روپے کی بجائے 50روپے فی کلو گرام ،چائنہ تھوم(لہسن) 250روپے فی کلو کی بجائے 280روپے سے 300روپے فی کلو گرام, لیموں 50روپے کی بجائے 80 روپے فی کلو گرام ہوتا رہا۔
مٹر 180روپے کی بجائے210روپے فی کلو گرام ، ادرک225روپے کی بجائے250 فی کلو گرام ،گھیا کدو 80 روپے کی بجائے110 روپے فی کلو گرام ،آلو 42روپے کی بجائے 70 روپے اور پیاز55روپے کی بجائے 90 فی کلو گرام فروخت ہو تا رہا ،اسی طرح دیگر تمام اقسام کی سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بھی30سے 50فیصد اضافہ کر دیا گیا ہے۔
شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب ، کمشنر راولپنڈی ،ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیاہے ، اندرون شہر سمیت ضلع بھر میں بااثر دکانداروں نے حکومتی رٹ کو چیلنج کر رکھا ہے مقررہ کردہ نرخوں سے کئی گنا اضافی پیسے وصول کئے جارہے ہیں ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو روزانہ کی بنیاد پر گرانفروشوں کے خلاف کارروائیاں کرنے کا پابند بنایا جائے تاکہ ضلع بھر میں قائم ہونے والی خود ساختہ مہنگائی کا خاتمہ ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button