جہلمالیکشن 2018

الیکشن 2018؛ چیف آفیسر، ڈی ایس پی ٹریفک، تحصیلدار اور دیگر افسران کے تاحال تبادلے نہ ہو سکے

جہلم: عام انتخابات سے قبل جہاں ملک بھر کی بیورو کریسی میں اکھاڑ پچھاڑ جاری ہے ،وہیں پرچیف آفیسر میونسپل کمیٹی جہلم ، ڈی ایس پی ٹریفک جہلم، تحصیلدار جہلم سمیت دیگر اداروں میں افسران جو کہ مسلم لیگ ن کے حمایت یافتہ ہیں کے تاحال تبادلے نہیں ہو سکے ان افسران میں میونسپل کمیٹی کے چیف آفیسراحسان اللہ وڑائچ ، ڈی ایس پی ٹریفک راجہ نثاراحمد، تحصیلدار ملک مسعود ندیم برتھ شامل ہیں شہری ، سماجی ، مذہبی ، رفاعی ، فلاحی ، کارروباری تنظیموں کے عمائدین نے چیف الیکشن کمیشن آف پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

تفصیلات کے مطابق 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات کیوجہ سے سرکاری اداروں میں تعینات مسلم لیگ ن کے حمایت یافتہ افسران کی موجودگی میں ضلع جہلم کی 2 قومی اور 3 صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے انتخابات مشکوک ہو گئے ہیں ان افسران کے ماتحت سینکڑوں سے زائد ملازمین اپنے اعلیٰ افسران کے کہنے پر مسلم لیگ ن کو ووٹ کاسٹ کر سکتے ہیں۔

ملک بھر میں عام انتخابات 2018 ء کے موقع پر جہاں بیوروکریسی میں تقررو تبادلوں کا سلسلہ جاری ہے وہیں میونسپل کمیٹی سمیت دیگر سرکاری اداروں میں صورتحال اس کے برعکس ہے ، ضلع جہلم میں الیکشن کے دوران مسلم لیگ ن کے لئے راہ ہموار کرنے اور دھاندلی کے لئے میونسپل کمیٹیوں کے چیئرمینز سمیت دیگر سرکاری اداروں کے افسران اہم سیٹوں پر اپنے منظور نظر اور مسلم لیگ ن کے حمایت یافتہ افسران کو تعینات کر ا رہے ہیں ،ضلع جہلم سے قومی اسمبلی کی 2 نشستوں ، صوبائی اسمبلی کی 3 نشستوں پر انتخاب ہوگا، جہاں مسلم لیگ ن کے منظور نظر افسران ووٹرز پر اثر انداز ہوں گے ، میونسپل کمیٹی ، ٹریفک دفتر، تحصیل آفس کے ملازمین کو چھٹیوں ، میڈیکل الاؤنسز ، ترقیوں اور تبادلوں کے حوالے سے انکے ماتحت ہیں جس کی وجہ سے وہ ان کے کسی حکم کو نہیں ٹال سکتے۔

ضلع جہلم سے انتخابات میں حصہ لینے والے مسلم لیگ ن سمیت امیدواران قومی اسمبلی نے نگران وزیر اعظم پاکستان ، چیف الیکشن کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پرڈی ایس پی ٹریفک ، تحصیلدار ، چیف آفیسر میونسپل کمیٹی کو ضلع بدر کیا جائے تاکہ شفاف انتخابات کا انعقاد ہو سکے۔میونسپل کمیٹی کی انتظامیہ نے سوچے سمجھے منصوبے کے تحت شہریوں کا پانی بند کرنا، گندگی نہ اٹھانا، تجاوزات کی پشت پناہی کرناجیسے ہتھکنڈے استعمال کرنا شروع کر رکھے ہیں جب متاثرین میونسپل کمیٹی شکایات لیکر آتے ہیں تو انہیں مسلم لیگ ن کو ووٹ دینے کا کہہ کر ان کی مشکلات حل کروائی جاتی ہیں ۔ جس کی وجہ سے سرکاری اداروں میں تعینات افسران کو ضلع جہلم سے تبدیل کرنا اشد ضروری ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button