غریب وال سیمنٹ فیکٹری سکیورٹی گارڈقتل کیس کا ڈراپ سین، سکیورٹی گارڈ اپنے ہی ساتھی کی گولی کا نشانہ بنا

0

پنڈدادنخان: غریب وال سیمنٹ فیکٹری سکیورٹی قتل کیس کا ڈراپ سین، سکیورٹی گارڈ اپنے ہی ساتھی کی گولی کا نشانہ بنا ، پولیس نے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق نامعلوم افراد کی فائرنگ واجد عنایت شدید مضروب اور بعد ازاں زخموں کی تاب نہ لا تے ہوئے جاں بحق ہو گیا تھا۔

صفدر علی ولد برکت علی ساکن پنڈی بھکھ تحصیل پنڈدادنخان حال سیکیورٹی آفیسر غریبوال سیمنٹ فیکٹری نے رپورٹ دی کہ سیکیورٹی گارڈز واجد عنایت ولد محمد عنایت اور قیصر علی ولد محمد صفدر ساکن پنڈی بھکھ تحصیل پنڈدادنخان ضلع جہلم پرانی فیکٹری میں گشت پرتھے کہ مغربی دیوار میں بڑا سا سوراخ بنا ہوا تھا۔جب اس کے قریب پہنچے تو تین نا معلوم افراد نے فائرنگ کردی جس سے واجد عنایت شدید زخمی ہوگیا جو بعد ازاں زخموں کی تاب نہ لا کرفوت ہوگیا۔

مدعی مقدمہ نے اس وقوعہ کو ڈکیتی کا رنگ دینے کی کوشش کی۔ جس پر عادل میمن ڈی پی او چکوال اور حاجی محمد شفیق ڈی ایس پی چوآسیدن شاہ کی ہدایت پرتفتیشی افسر محمد زراعت بلوچ انسپکٹر ایس ایچ او تھانہ چوآ سیدن شاہ نے مقدمہ درج کرکے تفتیش مقدمہ شروع کی۔

زراعت بلوچ ایس ایچ او جوکہ HIU سرکل چوآسیدن شاہ کے انچارج بھی ہیں نے اپنی ٹیم کے ہمراہ دن رات محنت کرکے مقدمہ ٹریس کرلیا۔ دوران تفتیش یہ بات سامنے آئی کہ مقتول واجد عنایت اپنے ساتھی گارڈ قیصر علی کی فائرنگ سے زخمی ہو کر قتل ہوا تھا اور مدعی مقدمہ صفدر علی اور قیصر علی نے حقائق چھپاتے ہوئے بیگناہ لوگوں کو پھنسانے کی کوشش کی۔

پولیس نے دونوں ملزمان کو گرفتار کرکے ان کا ریمانڈ جسمانی حاصل کرکے ملزم قیصر علی کی نشاندہی پرآلہ قتل پسٹل 30بورمعہ 3روند برآمد کرکے الگ مقدمہ درج کرلیا۔ عادل میمن ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر چکوال نے زراعت بلوچ انسپکٹر ایس ایچ او چوآسیدن شاہ کی اس شاندار کارروائی کو احسن الفاظ میں سراہا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.