جہلم

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ نے عوام کی چیخیں نکال دیں، شہری سراپا احتجاج

جہلم: عوام کو ریلیف دینے کی دعویدار حکومت نے پٹرولیم اور ایل پی جی کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوام کی پریشانیوں میں اضافہ کر دیا ہے ، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مسلسل چوتھی مرتبہ اضافہ کیا گیا ہے ، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے ہر شہری متاثرہوا ہے ، شہری پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے طوفان سے پریشان حال دکھائی دے رہے ہیں ،سبزیوں اور دالوں سمیت اشیاء خوردونوش کی قیمتیں پہلے ہی آسمان کو چھو رہی ہیں ،پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے ان کی قیمتیں مزید بڑھ گئی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار شہریوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ،انہوں نے کہا کہ حکومت اگر عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمت میں اضافے سے مجبور ہے تو اسے پٹرولیم مصنوعات پر عائد ٹیکسوں میں کمی کرکے اس اضافے کو اس طرح جذب کر دینا چاہیے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں نہ بڑھیں، حکومت مہنگائی کے ہاتھوں مجبور عوام کے مسئلہ کو اپنا مسئلہ سمجھے ، حکومت اس معاملے میں غور کرے اور موجودہ اضافہ واپس لے تاکہ عوام کو کچھ ریلیف مل سکے اور آئندہ اگر کسی وجہ سے قیمت میں اضافہ مطلوب ہو تو ٹیکسوں میں کمی کرکے عوام کو ریلیف دے ،نہ کہ قیمتوں میں اضافہ کیا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت حالات یہ ہیں کہ ملک کا مڈل کلاس طبقہ سخت معاشی مشکلات سے دوچار ہے جبکہ نچلا طبقہ معاشی جدو جہد سے باہر ہو چکا ہے ، جہلم کی سڑکوں ،چوک چوراہوں اور تجارتی مراکز بھکاریوں سے بھرے پڑے ہیں ، جو بھیک نہ مانگ پایا وہ جرائم کی دلدل میں پھنس گیا ۔جسم فروشی سمیت دیگر جرائم میں اضافہ صرف مہنگائی کیوجہ سے ہے جبکہ حکومت مزید مہنگائی کرکے ناجانے ملک و ملت کو کس حال میں دیکھنا چاہتی ہے حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ اور روزگار کے دروازے بند ہوتے جا رہے ہیں، بین الاقوامی رپورٹس کے مطابق پاکستان میں بیروزگاری کی شرح 35 فیصد سے بھی تجاوز کر چکی ہے ، جو بہت بڑالمحہ فکریہ ہے ، حکومت کسی بھی چیز میں اضافہ کے وقت یہ ضرور سوچے کہ غریب عوام اس بوجھ کو برداشت کرنے کی ہمت ہے یا نہیں ۔

مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے شہریوں نے کہا کہ حکومت نے پٹرول سمیت ایل پی جی میں اضافہ کرکے عوام پر ظلم کیا ہے ، عوامی مسائل حل کرنے مہنگائی کا سیلاب روکنے کا جھانسہ دیکر عوام کو مسائل اور مہنگائی کی دلدل میں پھنسایا جا رہاہے ، پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافہ غریبوں کے منہ سے آخری نوالہ بھی چھیننے کے مترادف ہے پہلے گیس کی لوڈ شیڈنگ شروع کروادی گئی اور اب قیمتوں میں اضافہ کرکے غریب شہریوں سے جینے کا حق بھی چھین رہے ہیں۔

سروے کے مطابق سماجی، رفاعی ، فلاحی تنظیموں کے عمائدین کا کہنا ہے کہ مہنگائی کے سیلاب کو روکنا موجودہ حکومت کا اولین فرض ہونا چاہیے کیونکہ اس عذاب کیوجہ سے غریب آدمی کا چولہا ٹھنڈا ہو چکا ہے ، مایوسی پھیل رہی ہے کیونکہ عوامی توقعات کے برعکس کوئی تبدیلی نہیں ہوئی ، تمام معاملات سابقہ حکمرانوں کی پالیسیوں کے مطابق چل رہے ہیں، کچھ بھی نہیں بدلہ عوام نے مسائل کے خاتمہ کے لئے جو ووٹ دیئے تھے ، حکمران اس کے برعکس پالیسیاں جاری رکھے ہوئے ہیں جس کیوجہ سے شہریوں میں موجودہ حکمرانوں سے سخت بے زاری کا اظہار کرتے ہوئے آئندہ ووٹ نہ دینے کا عندیہ دیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button