دینہاہم خبریں

ضلع جہلم کے مشہور پہاڑ ٹلہ جوگیاں سے ایک کروڑ سال پرانا ہاتھی دانت دریافت

دینہ: ضلع جہلم کے مشہور پہاڑ ٹلہ جوگیاں کے دامن سے ایک کروڑ سال پرانا ہاتھی دانت دریافت ہوا ہے، دانت کی لمبائی 20 انچ ہے، اس کا زیادہ تر حصہ مقامی لوگوں نے توڑ دیا ہے۔ یہ دانت پنجاب یونیورسٹی شعبہ زوالوجی کے طالب علم احمد محمد عارف اور مقامی سماجی شخصیت چوہدری عابد حسین نے دریافت کیا ہے۔

اس موقع پر جہلم اپڈیٹس کو چوہدری عابد حسین نے بتایا کہ میں پچھلے 22 سال سے پاکستان کی مختلف یونیورسٹیوں کے طلباء کے ساتھ کام کر رہا ہوں، یہ میں نے طلباء سے مل کر چھٹا دانت دریافت کیا ہے، سب سے پہلے 2003 ء میں تتروٹ سے دس فٹ لمبا ہاتھی دانت دریافت ہوا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ اب خطرناک بات یہ ہے کہ مقامی لوگ ان چیزوں کو اٹھا کر گھر لے جاتے ہیں اور پھر مجبور کرتے ہیں کہ ان کے پیسے دو، چند دن پہلے بھنڈر کے علاقے سے ہم نے ریسرچ کے سلسلے میں ہی کام کر رہے تھے، ایک جگہ پر ہم نے دیکھا کہ چار سے پانچ ہاتھی کے دانت ٹوٹے ہوئے ملے۔ علم نہ ہونے کی وجہ سے لوگ ان چیزوں کو گھر لے جاتے ہیں جس کا طلباء کو کچھ فائدہ نہیں ہوتا۔

چوہدری عابد حسین جو کہ تتروٹ کے رہنے والے نے بتایا کہ یہاں حکومت کو چاہئے کہ ٹلہ جوگیاں میں پارک بنائے تاکہ لوگ یہاں آئیں جس سے نہ صرف مقامی لوگوں کے روزگار میں اضافے کے موقع میسر ہوں بلکہ ملک کی آمدنی بھی بڑھے اور اب تک جتنی بھی دریافت ہوئی ہیں وہ چیزیں ان پارکوں میں رکھیں، پنجاب یونیورسٹی کے پروفیسر حضرات اس سلسلے میں مکمل رہنمائی کے لیے تیار ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button