دینہ

ڈرگ انسپکٹر ز کی مبینہ پراسرار خاموشی، میڈیکل سٹور وں پر کھلے عام نشہ آور انجیکشن دستیاب

ضلع بھر میں قائم متعدد میڈیکل سٹور وں پر کھلے عام نشہ آور انجیکشن دستیاب ہونے کیوجہ سے نہ صرف لوٹ مار کا بازار گرم ہے بلکہ ڈرگ انسپکٹر ز کی مبینہ پراسرار خاموشی کی وجہ سے نوجوان نسل تیزی سے تباہی کی جانب بڑھ رہی ہے۔

اگر شہری و دیہاتی حلقوں کا جائزہ لیا جائے تو پڑھے لکھے اچھی شکل و صورت کے نوجوان نشے کے عادی ہونے کیوجہ سے بھیک مانگتے اور چوری چکاری کی وارداتیں کرنے میں بھی مصروف عمل ہیں۔ بلا خوف و خطر کھلم کھلا موت بانٹنے والے میڈیکل اسٹور زمالکان چند روپوں کے انجیکشن کی منہ مانگی قیمت وصول کرکے نہ صرف نوجوانوں کو لوٹ رہے ہیں بلکہ ہنستے بستے گھرانوں کی تباہی کا بھی موجب بن رہے ہیں۔

نشہ آور انجیکشن فروخت کرنے کا غیر قانونی دھندہ تیزی کے ساتھ عروج پکڑتا جا رہاہے ، جس کی بنیادی وجہ ضلع جہلم میں تعینات ڈرگ انسپکٹرز کی مبینہ عدم دلچسپی ہے ، ڈرگ انسپکٹرز کے معاملات طے ہونے کیوجہ سے میڈیکل سٹورز مالکان دیدہ دلیری کے ساتھ ممنوعہ ادویات فروخت کرکے راتوں رات کروڑپتی بننے کے چکروں میں نوجوان نسل میں زہر فروخت کرکے گھناؤنا کارروبار جاری رکھے ہوئے ہیں۔

شہریوں نے ارباب اختیار سے مطالبہ کیاہے کہ ضلع جہلم میں فرض شناس ایماندار ڈرگ انسپکٹرز کو تعینات کیا جائے تاکہ ممنوعہ ادویات فروخت کرنے والے میڈیکل سٹورز مالکان کو قانون کے کٹہرے میں لایا جا سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button