پرائمری سکول ساہو چک دینہ کا ہیڈ ماسٹر طالبات سے غیر اخلاقی حرکات کرتے ہوئے پکڑا گیا

0

دینہ: مخلوط ایجوکیشن کا نتیجہ،گورنمنٹ پرائمری سکول ساہوچک تحصیل دینہ میں سکول کا ہیڈماسٹر جماعت چہارم کی طالبات کے ساتھ غیر اخلاقی حرکات کرتے ہوئے پکڑا گیا،اے ای او دینہ کی انکوائری پرالزام تسلیم کرلیا،نوکری سے معطل،شوکاز نوٹس جاری،اہل علاقہ،والدین میں شدید پریشانی کی لہر دوڑ گئی،سخت سے سخت کاروائی کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ پرائمری سکول ساہوچک تحصیل دینہ میں باقی تعلیمی اداروں کی طرح بچوں اور بچیوں کو مشترکہ تعلیم دی جاتی ہے۔اس سکول میں ایک میل ٹیچر اور تین فی میل ٹیچر تعینات ہیں،میل ٹیچر ناصر شہزاد (PST)اسٹیشن محلہ دینہ کا رہائشی ہے اور سکول کا ہیڈ ٹیچر بھی ہے،اس سکول کی جماعت چہارم کی طالبات بیلا،زینب اور ثنا نے اپنی فی میل ٹیچرز کوشکایت کی کہ ان کا استادناصر شہزاد کلاس کے لڑکوں کو بہانے سے باہر نکال کر کئی دنوں سے ان سے نازیبا،غیر اخلاقی حرکات کر رہا ہے۔

طالبات کی شکایات سن کر فی میل ٹیچرز نے محکمہ تعلیم ضلع جہلم کے افسران کو ساری صورت حال سے آگاہ کر دیا،جس پر اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسر مرکز دینہ سرفراز فاروق کو انکوائری افسر مقرر کیا گیا جنہوں نے مذکورہ سکول کا وزٹ کیا،جہاں ہیڈ ٹیچر ناصر شہزاد نے اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کو قبول کر لیا،جس پر اسے ملازمت سے معطل کر کے شوکاز نوٹس جاری کر دیا گیا۔

اے ای او نے اپنی رپورٹ میںناصرشہزاد (PST) پر پیڈا ایکٹ 2006لگانے کی سفارش کی ہے اور اس کو ملازمت جاری رکھنے سے انفٹ قرار دے دیا ہے۔ادھر طالبات کے ساتھ ٹیچر ناصر شہزاد (PST)کی غیر اخلاقی حرکات سامنے آتے ہی طالبات کے والدین اور اہل علاقہ میں شدید پریشانی،غصے کی لہر دوڑ گئی ہے،انہوں نے ٹیچر ناصر شہزاد (PST) کو سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.