جہلم

جہلم شہر میں گراں فروشوں کی بادشاہت قائم، شہری مہنگے اشیاء خوردونوش خریدنے پر مجبور

جہلم: شہر میں گراں فروشوں کی بادشاہت قائم، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غائب، شہری مہنگے اشیاء خوردونوش خریدنے پر مجبور، آٹے چینی، گھی، دالوں کے بعد سبزیوں کی قیمتیں بھی آسمانوں سے باتیں کرنے لگیں۔ شہر بھر میں سبزیوں کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ، شہری مہنگی سبزیاں خریدنے پر مجبور، شہری حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے۔

تفصیلات کے مطابق شہر میں سبزی فروشوں نے ٹماٹر 50 روپے سے60 روپے فی کلو میں فروخت کئے جبکہ پیاز 60 سے 70 روپے، سبزمرچ 70 سے 80 روپے فی کلوتک فروخت کی گئی۔ ادرک 390 روپے، لیموں چائنہ 120 سے 130 روپے کلو میں فروخت کیا جاتا رہا۔

آلو 60 روپے، پھول گوبھی 100 سے 110 روپے، بھنڈی 110 سے 120 روپے کلو میں فروخت کی گئی، کریلا 130 سے 140 روپے ،گھیا کدو 60 سے 70 روپے ، لہسن کی قیمتوں کو بھی پر لگ گئے، ضلعی انتظامیہ سرکاری نرخوں پر عمل درآمد کروانے میں مکمل ناکام ہیں جس کے باعث سبزیاں بھی شہریوں کی پہنچ سے دور ہوتی جارہی ہیں ۔

شہر کی سماجی ، رفاعی ، فلاحی تنظیموں کے عمائدین کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ دکانداروں کی جانب سے لوٹ مار کا سلسلہ جاری ہے، شہریوں کا کوئی پرسان حال نہیں،بااثر دکانداروں نے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ کرکے حکومتی رٹ کو چیلنج کرکے رکھ دیا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ سفید پوش طبقہ سبزی منڈی سمیت بازار سے اشیاء خوردونوش کے نرخ سن کرخالی ہاتھ واپس لوٹنے پر مجبور ہے۔ شہریوں کا اپنے بچوں کی خواہشوں کا گلا گھوٹنے کے سوا کوئی چارہ نہیں۔ بے بسی،بے چینی اور نا امیدی نے گھروں میں ڈیرے ڈالے ہوئے ہیں۔

عوامی حلقوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ مہنگائی کے خلاف متعلقہ افسران کو کاررائیاں کرنے کا پابند بنائیں تاکہ سرکاری سرپرستی میں جاری لوٹ مار کا خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button