جہلم

مشکوک افراد جہلم کے ہوٹلوں، میرج ہالز سمیت نجی کارروباری مراکز پر ملازمین کے بھیس میں منتقل

جہلم: قانون نافذ کرنے والے اداروں کی خاموشی، پنجاب سمیت دیگر اضلاع سے مشکوک افراد ہوٹلوں ، میرج ہالز سمیت نجی کارروباری مراکز پر ملازمین کے بھیس میں منتقل، ان افراد کے پاس کوئی شناختی دستاویزات موجود نہیں ، کرایہ داری کا اندارج بھی نہیں، اکثر و بیشتر افراد منشیات استعمال اور فروخت کرنے میں ملوث، شہریوں کا ڈی پی او سے نوٹس کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر میں سیکورٹی اداروں کی خاموشی کافائدہ اٹھاتے ہوئے پنجاب سمیت دیگر صوبوں سے چوری چکاری میں ملوث افراد ہوٹلوں ، میرج ہالز، نجی کارروباری مراکز سمیت دیگر شعبوں میں کام کرتے ملازمین کے روپ میں پناہیں حاصل کرچکے ہیں۔

ہوٹلز و میرج ہالز مالکان ایسے افراد جو اپنے اضلاع سے مفرور ہیں کو چند سو روپے دیہاڑی پر ملازم رکھ لیتے ہیں جہاں وہ سارا دن آنے والے صارفین پر نظر رکھتے ہیں اور انہیں کو شکار کیا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ موٹر سائیکلوں کے ساتھ لٹکائی اشیاء بھی غائب کردیتے ہیں۔شاندار چوک سمیت شہر کے دیگر چوک چوراہوں ، کارروباری مراکز میں درجنوں کے حساب سے دیگر شہروں سے آنے والے ملازمین چوری چکار ی سمیت سٹریٹ کرائم کی وارداتیں کرنے سے بھی گریز نہیں کرتے۔

شہریوں نے ڈی پی او جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ بیرونی اضلاع سے آنے والے تمام افراد کاریکارڈ اور شناختی ریکارڈ چیک کروائے جائیں اور غیر قانونی طریقے سے ایسے افراد کو پناہ دینے والے کارروباری افراد کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھی جائے تاکہ جرائم میں کمی واقع ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button