جہلم

غیر قانونی کمرشل عمارتیں، میرج ہالز، مارکیز تعمیر کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج

جہلم: تھانہ اینٹی کرپشن نے غیر قانونی کمرشل عمارتیں ، میرج ہالز، مارکیز تعمیر کرنے والے مالکان اور میونسپل کارپوریشن کے ذمہ داران کے خلاف مقدمات درج کرلئے ، میونسپل کاپوریشن کو نقصان پہنچانے کی کسی کو اجازت نہیں دی جائے گی۔
تفصیلات کے مطابق تھانہ اینٹی کرپشن نے ذرائع سے حاصل ہونے والی معلومات پر جہلم شہر جی ٹی روڈ پر قائم فریش مین میرج ہال / ریسٹورنٹ، بندھن میرج ہال جادہ ، پنجاب میرج ہال جی ٹی روڈ کالا گجراں کی تعمیرات بناء نقشہ جات کے تعمیر کیں ، میونسپل کارپوریشن جہلم کے ریکارڈ سے ثبوت نہ ملنے پر مقدمات درج کر لئے گئے۔
میونسپل کارپوریشن کے چیف آفیسر انعام الرحیم، محمد اکرم گوندل (ایم اینڈپی ) ، شیراز اسلم (ایم اینڈ آر) ، طارق عزیز ( ایم اینڈ پی ) ، محمد علی ( ایم اینڈ آر)، سرفراز خان (ایم اینڈ آر)محمد اقبال (ایم اینڈ پی )، اعجاز اقبال (ایم اینڈ پی )، الفت حسین (ایم اینڈ آر) قاسم رفیق (بلڈنگ انسپکٹر)، غلام قمر(بلڈنگ انسپکٹر)، محمد عثمان(انفورسمنٹ انسپکٹر)، شہباز طارق(انفورسمنٹ انسپکٹر) ، محمد اصغر ولد محمد اسحاق تحصیل و ضلع جہلم کے خلاف زیر دفعہ 409/109 پی پی سی 5/2/47 پی سی اے کے تحت مقدمات درج کرکے تفتیش کا دائرہ کار وسیع کر دیا گیا ہے۔
قابل ذکر بات یہ ہے کہ سول لائن روڈ، محمدی چوک ، کالا گجراں، جادہ ، بلال ٹاؤن، چونترہ کھرالہ ، سمیت اندرون شہر کے گلی محلوں میں سینکڑوں ایسی عمارتیں موجود ہیں جن کے نقشہ جات منظور ہی نہیں ہوئے بااثر مالکان نے میونسپل کمیٹی کے متعلقہ شعبہ کے ذمہ داران کے ساتھ ساز باز کرکے پلازے ، کوٹھیاں ، کمرشل دکانیں تعمیر کر رکھی ہیں۔
شہریوں نے تھانہ اینٹی کرپشن کی کارروائی کو سراہتے ہوئے ڈپٹی کمشنر جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ اندرون شہر اور ملحقہ آبادیوں میں تعمیر ہونے والے پلازوں ، کوٹھیوں ، مارکیٹوں ، دکانوں کی از سر نوتحقیقات کروائی جائیں بغیر نقشہ منظوری کے تعمیر ہونے والی عمارتوں کو گرایا جائے اور میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران کے خلاف فوجداری مقدمات درج کروائے جائیں تاکہ میونسپل کارپوریشن کو ریونیوکی مد میں ماہانہ لاکھوں روپے حاصل ہو سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button