سول ہسپتال پنڈدادنخان کے ایم ایس کی ہٹ دھرمی، لواحقین کو میت گھر لے جانے کیلئے ایمبولینس دینے سے انکار

0

پنڈدادنخان: تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال پنڈدادنخان بنیادی سہولیا ت سے محروم، ہسپتال انتظامیہ نے لواحقین کو ڈیڈ باڈی گھر لے جانے کے لئے ایمبولینس دینے سے انکار کر دیا، عملہ ہمارے ساتھ ہتک آمیزروایہ سے پیش آتا رہا، لواحقین

تفصیلات کے مطابق تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال نئے پاکستان میں بھی بنیادی سہولیات سے محروم ہے، تحصیل بھر کے مریض پرائیوٹ ہسپتالوں میں خوار ہونے پر مجبور ہوگئے، کھیوڑہ میونسپل کمیٹی کے سابق سیکرٹری محمد خالد کو ہارٹ اٹیک ہوا جسکو ایمرجنسی میں تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال لایا گیا۔

ڈاکٹر نے چیک اپ کرنے کے بعد بتایا کہ مریض مر چکا ہے تو لواحقین نے ڈیڈ باڈی لے جانے کے لیے ہسپتال سے ایمبولنس مانگی لواحقین کے مطابق ہسپتال میں ایمبولنس اور ڈرائیور ہونے کے باوجود ایم ایس ڈاکٹر جمالی نے ایمبولنس دینے سے انکار کر دیا اور لواحقین کے ساتھ ہتک آمیز روایہ سے پیش آتارہا۔

عوامی سماجی حلقوں اور لواحقین نے وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری اور حکومت پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتا ل میں فوری طور پر ایمبولنس فراہم کی جائے اور ایم ایس ڈاکٹر جمالی کے مریضوں کے ناروا سلوک کا نوٹس لیتے ہوئے محکمانہ کاروائی کی جائے۔

ڈاکٹر انعام اللہ جمالی نے موقف دیتے ہوئے کہا کہ ہسپتال میں جو ایمبولنس موجود ہے وہ صرف زچہ بچہ کے لیے ہے تحصیل پنڈدادنخان میں 1122والے ایمبولنس دیتے ہیں تحصیل ہیڈ کواٹر ہسپتال میں مریضوں کے لیے ایمبولنس کی سہولت موجود نہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.