جہلم کو ترقی کی بلندیوں پر لے کر جائیں گے، میڈیا کی آزادی پر یقین رکھتے ہیں۔ فواد چوہدری

0

جہلم: جہلم کو ترقی کی بلندیوں پر لے کر جائیں گے، میڈیا کی آزادی کیلئے فنڈز کی بندش ضروری ہے ، مقامی صحافیوں کو جہلم کے ایشو پر لکھنا چاہیے ، ہم ضلعی انتظامیہ کے ساتھ ملکر مسائل کو حل کریں گے،ضلع بھر کے ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے اور کچھ منصوبے بہت جلد شروع کئے جائیں گے۔

ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد حسین چوہدری نے جہلم پریس کلب کے نو منتخب عہدیداران سے حلف برادری کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے ساتھ ذاتی لڑائی نہیں ، ملکی دولت لوٹنے والوں کو حساب دینا ہوگا، قوم نے اسی لئے ووٹ دیئے اپوزیشن کو کبھی آپ نے اسمبلی میں عوامی مسائل پر بات کرتے ہوئے نہیں سنا ہوگا، گھس کر مار نے کی دھمکیاں دینے والوں کو بتا دیا کہ خام خیالی چھوڑ دیں ، بھارت ہمارے امن کے پیغام کو کمزوری نہ سمجھے،آج پوری دنیاء میں پاکستان کو عزت کی نگاہ سے دیکھا جا رہاہے۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا کی آزادی پر یقین رکھتے ہیں ، میڈیا کی آزادی کے لئے یہ بھی ضروری ہے کہ حکومت فنڈز نہ دے تاکہ میڈیا پوری آزادی کے ساتھ کام کرے، انہوں نے کہا کہ پانامہ ایشو آنے کے بعد مسلم لیگ ن نے اربوں روپے کے فنڈز دیئے ، وزیر اطلاعات نے کہا کہ جہلم پریس کلب کی تزین و آرائش جلد کروائی جائیگی ایسا میکنیزم بنا کر دیں گے کہ پریس کلبز اپنے اخراجات خود پورے کر سکیں۔

چوہدری فواد حسین نے کہا کہ جہلم کے صحافیوں کو ایشوز پر لکھنا چاہیے ہم ضلعی انتظامیہ کے ساتھ ملکر مسائل کو حل کریں گے، انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے اور کچھ منصوبے بہت جلد شروع کئے جائیں گے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ گھس کر مارنے کی دھمکیاں دینے والوں کو بتا دیا ہے کہ خام خیالی چھوڑ دیں، یہ افواج پاکستان کے جوانوں کی بہادری اور جفاء کشی ہے ، جن سے کسی کو پاکستان میں گھسنے کی جرات نہیں ہو سکتی ، ہم امن کے لئے کھڑے ہیں،ہم نے کبھی پہل اور زیادتی نہیں کی ، بھارت سمیت جہاں بھی دہشت گردی ہوئی پاکستان نے اس کی مذمت کی۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے کہا دہشت گردی کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہے ، وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے حلف اٹھانے سے پہلے کہا کہ آپ ایک قدم بڑھائیں گے ہم دوقدم بڑھائیں گے ، یہ ہمارے وزیر اعظم کی امن سے کمٹمنٹ تھی جس پر آج تک ہم کھڑے ہیں ، جس کی وجہ سے میں نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان کو امن کا نوبل انعام دینا چاہیے آج امریکہ کامیڈیا کہہ رہاہے کہ پاکستان کے وزیراعظم کو امن کا نوبل انعام دیا جائے کیونکہ ان کی وجہ سے پوری دنیاء ایک بڑی جنگ سے بچ گئی ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ جب وزیر اعظم پاکستان کو امن کا انعام ملے گا تو اس سے پاکستان اور عوام کو عزت ملے گی ، وزیر اعظم ایک انفرادی معاملہ نہیں وہ پاکستان کے وزیر اعظم ہیں جو لوگ اسمبلی میں کھڑے ہو کر مذاق اڑاتے ہیں ان کے لئے افواج پاکستان اور قوم کا بھی احترام نہیں ہے ، اس لئے ان کے پاس عمران خان کا کوئی احترام نہیں پاکستان کی قوم نے پہلے ہی اپنے ووٹ کے ذریعے عمران خان کو احترام دیا اور آج عمران خان پوری پاکستانی قوم کو عزت و احترام دے رہے ہیں ، اگر مشرق وسطیٰ میں عمران خان کا احترام ہے تو پوری قوم و ملک کا احترام ہے ، آج پوری قوم تحریک انصاف اور افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے ، اس لئے کوئی پاکستان کی طرف میلی آنکھ سے نہیں دیکھ سکتا، بھارت ہمارے امن کے پیغام کو کمزوری نہ سمجھے ، جہلم نے دفاع وطن کے لئے نامور سپوت پیدا کئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جہلم کے لوگ اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر سرحدوں کی حفاظت کرنا اپنا فرض سمجھتے ہیں، جہلم کے شہداء نے اپنا خون پاک سرزمین کو امانت کے طور پر دیا، جس کیوجہ سے آج پورے پاکستان میں افواج پاکستان کو حرمت اور عظمت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے ، آج ہندوستان کا پوری دنیاء میں مذاق اڑایا جا رہاہے ،ہندوستانی وزیر اعظم نے کہا تھا کہ پاکستان کے اندر گھس کر ماریں گے ، ہندوستانی طیاروں کو جس مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا ہندوستانی حکمران ہمیشہ یاد رکھیں گے اور یہ واقعہ تاریخ میں سنہری حروف سے لکھا جائیگا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ پچھلی حکومتیں مسائل کے انبار چھوڑ کر گئیں جس کی وجہ سے تعلیم، صحت کے لئے بجٹ نہیں تھا، پاکستان کا قرضہ 30 ہزار کروڑ روپے پر چلا گیاجب ان سے پوچھیں وہ پیسے کدھر چلے گئے ، تو کہتے ہیں کہ میں بیمار ہوں اب خورشید شاہ کہہ رہاہے کہ اگر نوا ز شریف کو کچھ ہوا تو پرچہ عمران خان کے خلاف درج کروائیں گئے ، بھئی تمہیں نواز شریف کی فکر نہیں ہے تمہیں اپنے جیل جانے کی فکر ہے اس لئے کہ انہوںنے جو کرتوت کئے وہ سب کے سامنے ہے اس وقت حکومت اور اپوزیشن میں کوئی لڑائی جھگڑا نہیں صرف ایک لڑائی ہے ہم کہتے ہیں کہ پاکستانی عوام کے پیسوں کا حساب دیں ،ہم کہتے ہیں نہ رو حساب دو ، وہ کہتے ہیں این آر او ، این آر او، اب یہ فیصلہ پاکستان کی عوام کر چکی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ موجودہ اپوزیشن کا صرف اتنا ایجنڈہ ہے اس اپوزیشن کو کبھی آپ نے اسمبلی میں عوامی مسائل پر بات کرتے ہوئے نہیں سنا ہوگا، کبھی انہوں نے مہنگائی پر آواز نہیں اٹھائی ، کبھی انہوں نے معیشت کی بہتری کے لئے آواز نہیں اٹھائی ، جب بھی اسمبلی کا اجلاس ہوتا ہے ، مجمع لگتا ہے نیب کا بورڈ آف گورنر بیٹھ گیا ہے ، سارے آکر آنسو بہا کر چلے جاتے ہیں، پاکستانی قوم نے ہمیں اس لئے مینڈیٹ نہیں دیا کہ ہم احتساب پر سمجھوتہ کریں اگر پی ٹی آئی احتساب پر سمجھوتہ کرے گی تو آپ کا ہاتھ اور ہمارا گریبان ہوگا، ہمیں چوروں و ڈاکوئوں سے حساب لینے کے لئے ووٹوں سے نوازا گیا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ احتساب پاکستان کے لوگوں کی خواہش پر کیا جارہاہے ، اسمیں کسی پارٹی کے گروہ کا عمل دخل نہیں ہے ، اس لئے احتساب ہونا اہم ہے ، احتساب سے کسی طور پر بھی بھاگا نہیں جا سکتا، احتساب کا عمل جاری رہے گا، سیاست نہ احتساب اور نہ صحت پر ہونے چاہے ہم نواز شریف سے کہہ رہے ہیں کہ آپ نے کس ڈاکٹر اور کس ہسپتال میں علاج کروانا ہے اللہ نے آپ کو وسائل دئیے ہیں آپ باہر سے اپنا ڈاکٹر بلوا لیجئے ہم اس کے لئے بھی تیار ہیں لیکن یہ کیا بات ہے کہ میں نے کسی ڈاکٹر کے پاس نہیں صرف لندن جانا ہے اس سے تو ایسے لگ رہا ہے کہ علاج نہیں سیاست ہورہی ہے شاید یہ بھی ہو کہ نواز شریف ایسا نہ کر رہے ہوں۔

حلف برداری کی تقریب میں شہرکی سماجی ، رفاعی ، فلاحی ، مذہبی ، کارروباری ،سیاسی تنظیموں کے عمائدین سمیت ضلع بھر کے صحافیوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔نو منتخب عہدیداران جن میں سرپرست چوہدری سہیل عزیز، چیئرمین راجہ نوبہار خان، وائس چیئرمین چوہدری مہربان حسین ، صدر چوہدری عابد محمود، نائب صدر مرزاکفیل بیگ (کیفی )،سینئر نائب صدر الیاس صادق وٹو، جنرل سیکرٹری محمد شہباز بٹ، جائنٹ سیکرٹری ملک انجم یوسف، فنانس سیکرٹری چوہدری کامران اصغر، سیکرٹری اطلاعات مشرف جنجوعہ، آفس سیکرٹری عبدالغفارآزادحلف اٹھانے والوں میں شامل تھے۔

حلف برداری کی تقریب سے معروف سینئر صحافی اعزاز سید، صدر جہلم پریس کلب چوہدری عابد محمود نے خطاب کیا جبکہ سرپرست چوہدری سہیل عزیز نے تقریب کے اختتام پر مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.