جہلم

جہلم شہر میں بھاری گاڑیوں کے داخلے پر پابندی عائد نہ ہوسکی، حادثات روزانہ کا معمول بن گئے

جہلم: اندرون شہر میں بھاری گاڑیوں کے داخلے پر پابندی عائد نہ ہوسکی ، حادثات روزانہ کا معمول بن گئے ، گزشتہ روز ڈمپر کی ٹکر سے بجلی کا پول زمین بوس ہونے سے گھنٹوں بجلی بند رہی ، شہریوں کا ڈپٹی کمشنر ، ڈی پی او جہلم ، ڈی ایس پی ٹریفک سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ضلعی انتظامیہ نے شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر بھاری گاڑیوں کے داخلے پر پابندی کے حوالے بورڈ تو آویزاں کر رکھے ہیں لیکن ان پر عملدرآمد کروانے میں انتظامیہ بری طرح ناکام دکھائی دیتی ہے جس کے باعث گزشتہ روز ڈپٹی کمشنر کی رہائش گاہ کے باہر بجلی کے پول کے ساتھ ڈمپر ٹکرانے کیوجہ سے بجلی کے پول پر نصب ٹرانسفارمر اور پول زمین بوس ہو گیا۔

ہیوی ٹرانسمیشن لائن گزرنے کے باعث بجلی کی تاروں میں آگ بھڑک اٹھی اور بلال ٹاؤن ضلع کچہری ، آفیسر کالونی سمیت متعدد علاقوں کی بجلی اور پانی کی سپلائی بند ہوگئی جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

یہاں یہ امر قابل زکر ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر بڑے بڑے بورڈ آویزاں کر رکھے ہیں جس کے مطابق بھاری گاڑیوں کا شہر میں داخلہ ممنوع ہے ، انتظامیہ کی سرپرستی کیوجہ سے کریش مالکان اور ٹرانسپورٹرز انتظامیہ کی طرف سے مقرر کئے گئے راستوں پر آمدورفت جاری رکھنے کی بجائے شہر میں سے گزرنے کو ترجیح دیتے ہیں جس کیوجہ سے اندرون شہر چکدولت روڈ سمیت دیگر سڑکیں گڑھوں میں تبدیل ہو چکی ہیں۔

شہریوں کی جانب سے متعدد مرتبہ قومی و مقامی اخبارات کے ذریعے اندرون شہر میں بھاری گاڑیوں کی آمدورفت کے حوالے خبریں شائع کی گئیں لیکن انتظامیہ کی سرپرستی کیوجہ سے کریش مالکان اور ٹرانسپورٹرز کے خلاف کارروائیاں کرنے سے انتظامیہ گریزاں ہے۔

شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب، کمشنر راولپنڈی ، ڈی پی او ، ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ ٹریفک پولیس ، آر ٹی اے سیکرٹری ، موٹر وہیکل ایگزامینر کوشہر کے اندر داخل ہونے والی بھاری گاڑیوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ سڑکوں کے ساتھ ساتھ حادثات سے بچا جا سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button