پنڈدادنخان

ریاست مدینہ کے دعوے داروں کے دورحکومت میں مزدود بھوک سے مر رہے ہیں۔ حاجی عبدالغفور

پنڈدادنخان: غریب وال سیمنٹ فیکٹری یونین حاجی عبدالغفور کی طرف سے ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کی بندش کے دوران جاں بحق ہونے والے ورکرز کے لیے مالی معاونت کے سلسلہ میں حیات ریسٹورنٹ پر تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری یونین کے عہدداران، غریب سیمنٹ فیکٹری یونین صدر حاجی عبدالغفور سمیت ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کے مزدورں کی فیملی سمیت سول سوسائٹی صحافیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے معروف سماجی مزدور رہنما چوہدری ریاض للِہ نے کہا کہ ہم غریب وال سیمنٹ فیکٹری خصوصی حاجی عبدالغفور کے شکر گزار ہیں جنہوں نے مشکل وقت میں مزدودوں سے اظہار یکجہتی کیلئے مالی معاونت فراہم کی۔

ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری یونین صدر ملک نصرت نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری کی رفاعی حوالے سے خدمات ناقابل فراموش ہیں، شوکت خانم ہسپتال کی تعمیر میں مزدودوں نے اپنے خون پسینے کی کمائی سے حصہ ڈال مگر آج فیکٹری بندش سے مزدود فاقہ کشی کا شکار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مالکان مسلسل مزدودوں کا استحصال کر رہے ہیں، مالکان نے فیکٹری سے اربوں روپے کا فائدہ اٹھایا اور کھاتوں میں مسلسل خسارہ شو کرتے رہے، مزدودوں کے حقوق کے لیے آخری حد تک جائیں گے۔ ملک نصرت نے غریب وال سیمنٹ فیکٹری کے حاجی عبدالغفور کا شکریہ ادا کیا۔

غریب وال سیمنٹ فیکٹری ایمپلائز یونین کے صدر حاجی عبدالغفور نے کہا کہ میں آپ سب کا مشکور ہوں جو ہماری آواز اعلی حکام تک پہنچاتے ہیں، ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری اس وقت بدترین بحران کا شکار ہے۔

حاجی عبدالغفور نے کہا کہ ڈنڈوت سیمنٹ فیکٹری کی بندش کے دوران جو بھی مزدود فوت ہو گیا اسکے اہل خانہ کی مالی معاونت کے لیے 50 ہزار روپے فراہم کریں گے۔ غریب وال سیمنٹ فیکٹری کے مزدود اپنے بھائیوں کی فلاح وبہبود کے لیے بھرپور کردار ادا کریں۔ اپنے منتخب نمائندوں سے بار بار اپیل کی کہ ہمارا بازوں پکڑیں مگر افسوس کہ ہماری سیاسی قیادت نے ہمیں مایوس کیا، ہماری دادرسی نہیں کی جا رہی، ریاست مدینہ کے دعوے داروں کے دورحکومت میں مزدود بھوک سے مر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہماری ریاست سے اپیل ہے کہ ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کی بندش کو فوری طور پر ختم کرایا جائے تاکہ مزدود ملکی معیشت میں بہتری کے لئے اپنا کردار ادا کر سکیں۔ تقریب کے اختتام پر ڈنڈوٹ سیمنٹ فیکٹری کی بندش کے دوران فوت ہونے والے 6 مزدورں کی فیملی میں 50 پچاس ہزار روپے کی معاونت فراہم کی گئی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button