جہلم

گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی مارچ، جی ٹی روڈ بند ہونے سے ہزاروں مسافر رل گئے

جہلم: ہالینڈ کے خلاف احتجاج ، شہریوں کے لئے عذاب ، جی ٹی روڈ بند ہونے سے ہزاروں مسافر رل گئے، سخت گرمی اور حبس میں عورتیں بچے ، بزرگ سڑک کنار ے تڑپتے رہے،بھوکے پیاسے بچوں کی مولوی خادم رضوی اور حکومت کو بدعائیں ، گستاخوں کو نمٹنا حکومت کا کام ہے ہمارا کیا قصور ہے ایمبولینس میں بیمار خاتون کی گفتگو۔

گستاخانہ خاکوں کے خلاف احتجاجی ریلی کے جہلم کی طرف گامزن ہونے پر ضلعی حکومت نے گزشتہ رات ہی دریائے جہلم پل کو بند کر دیا جس سے لاہور سے راولپنڈی اور اسلام آباد سے لاہور، گجرانوالہ، گجرات جانے والی ہزاروں گاڑیاں پھنس گئیں جس سے ہزاروں مسافر ذلیل وخوار ہو کر رہ گئے۔

کئی کئی گھنٹے گاڑیاں پھنسی رہنے سے خواتین ،بچے ، بزرگ اور بیماروں کا بڑاحال ہو گیا۔سخت حبس کے موسم میں گاڑیوں کے اندر گرمی کے باعث کئی مقامات پر درجنوں عورتیں بچے سڑکوں پر لیٹے نظر آئے، جبکہ کئی مریض ایمبولینسوں میں تڑپتے رہے ۔

ایک ایمبولینس میں ایمرجنسی کی حالت میں پڑی خاتون نے تکلیف سے روتے کہا کہ جن لعنتی افراد اور حکومتوں نے گستاخی کی ہے ان کے خلاف حکومت کو ایکشن لینا چاہئے یہ جگہ جگہ روڈ بلاک کرکے ہم کو کس جرم کی سزا دی جارہی ہے ۔

خاتون نے بتایا کہ میرا سیریس آپریشن ہے لیکن چار گھنٹے سے ٹریفک جام میں پھنسی ہوئی ہوں، کئی شہریوں نے آئے روز جلوسوں کے نام پر شہریوں کو ذلیل وخوار کرنے پر مولوی خادم رضوی کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور حکومت سے اس ناسور سے جان چھڑوانے کا مطالبہ کیا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button