سوہاوہ

سوہاوہ میں افسر شاہی کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے

سوہاوہ میں افسر شاہی کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے، ایک طرف حکومت کی اوپن ڈور پالیسی کی خلاف ورزیاں جاری ہیں تو دوسری طرف وقت کو گھر کی لونڈی سمجھنے والوں نے سوہاوہ کی عوام کو ذلیل کرنا اپنا فرض سمجھ لیا، سیاسی یتیم کہلانے والے سوہاوہ کو افسر شاہی نے یتیمی کا سرٹیفکیٹ دے دیا، منتخب نمائندوں نے بھی عزت بچاؤ وقت ٹپاؤ پالیسی اختیار کر لی۔

تحصیل آفس سوہاوہ میں شہری پورا پورا دن افسر کے انتظار میں رہتے ہیں جبکہ کچھ عرصہ قبل لاکھوں روپے لگا کر بائیو میٹرک حاضری کے لیے لگائی جانے والی مشینیں بھی صرف عوام پر بوجھ ہی ثابت ہوئیں۔

عوام نے چیف سیکرٹری پنجاب سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ سوہاوہ کی عوام پر رحم کھائیں اور ضلع سمیت تحصیل سوہاوہ میں کام کرنے والے افسران کو تعینات کیا جائے کیونکہ افسران اگر پورا دن میں صرف ایک دو گھنٹے منہ دکھائی کے لیے دفتروں میں آئیں گے تو عوام کے مسائل کا مداوا ممکن نہ ہو سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ جہاں آپ نے ایک طرف وقت کی پابندی اور اوپن ڈور پالیسی کا حکم نامہ جاری کر کے عوام کی امنگوں کی ترجمانی کی ہے وہیں اس حکم نامہ کی پاسداری بھی کروائی جائے کیونکہ سوہاوہ کی عوام اب سیاسی یتیمی کے ساتھ ساتھ انتظامیہ کی طرف سے بھی شدید زیادتی کا شکار ہو رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے یہاں جب بھی کسی کو کسی نے آئینہ دکھانے کی کوشش کی ہے تب تب وہ انتقامی کارروائی کا نشانہ بنا ہے لیکن مستقبل قریب میں انتظامیہ کی طرف سے دکانداروں کے معاشی قتل کے پیش نظر ایک بہت بڑے طوفان کا اندیشہ ظاہر ہو رہا ہے جو نہ صرف سیاسی نابالغوں کی خود کشی کا باعث بنے گا بلکہ یہ طوفان نئے راستے بھی بنائے گا۔

ایک طرف انتظامیہ نے حکومتی احکامات کی جہاں دھجیاں اڑائی ہوئی ہیں وہیں، دوسری طرف منتخب نمائندوں نے بھی اپنے مفادات کی سیاست کو جاری رکھا ہوا ہے۔اگر یہی سلسلہ مسلسل جاری رہا تو سوہاوہ کی عوام اور تاجر برادری کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو جائے گا اور احتجاج کے ساتھ ساتھ شٹر ڈاؤن ہڑتال بھی متوقع ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button