جہلم

جہلم شہر اور گردونواح میں اشیائے خورونوش میں ملاوٹ عروج پر پہنچ گئی

جہلم: شہر اور گردونواح میں اشیائے خورونوش میں ملاوٹ عروج پر پہنچ گئی، دودھ ، دہی، گھی، چائے کی پتی، مصالحہ جات، سرخ مرچ، بیسن اور دیگر چیزوں کا خالص ملنا ناممکن ہوگیا، سب سے زیادہ ملاوٹ دودھ ، دہی، گھی، چائے کی پتی، مصالحہ جات، سرخ مرچ، بیسن میں کی جارہی ہے۔

شہر کے مختلف علاقوں میں کیمیکلز سے تیار دودھ، دہی کی فروخت بھی روز کا معمول بن چکی ہے، دودھ، دہی کے نام پر کھلے عام صارفین کو زہر فروخت کیا جا رہاہے، مضر صحت اشیاء خوردونوش کے استعمال سے شہریوں کی بہت بڑی تعداد ہیپاٹائٹس، ٹی بی، گردوں ، معدہ ،جگر اور دیگر امراض میں مبتلا ہورہی ہے۔

پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران حسب سابق روایت فرضی کارروائیاں کرتے دکھائی دیتے ہیں جبکہ دکاندار دیدہ دلیری کے ساتھ کھلے مصالحہ جات اور ملاوٹ شدہ ،دودھ ، دہی ، گھی فروخت کر رہے ہیں۔

شہر کی سماجی ، رفاعی ، فلاحی تنظیموں کے عمائدین نے وزیراعلیٰ پنجاب ، ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button