جہلم

فائر بریگیڈ کو ریسکیو 1122کے ماتحت کرنے کا معاملہ، یونین کاہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ

جہلم: محکمہ بلدیات کے اہم ترین شعبہ فائر بریگیڈ کو ریسکیو 1122کے ماتحت کرنے کا معاملہ،یونین کاہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ، سروس سٹرکچر کے بغیر چلنے والی ریسکیو کا کیا مستقبل ہے ناتجربہ کار ڈی اوز کو اہم محکمے کیسے دیا جاسکتا ہے، فائر بریگیڈ کو ریسکیو کے زیر انتظام دینے کی بجائے اپ گریڈ کیا جائے، یونین انتظامیہ کا موقف۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی جانب سے محکمہ بلدیات پنجاب کے اہم ترین اور متحرک شعبہ فائر بریگیڈ کی گاڑیوں، سٹاف اور آلات کو ریسکیو 1122کے حوالے کرنے پر ملازمین ، فائر یونین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ۔

ایک سیکرٹری کی جانب سے جاری کردہ لیٹر میں پنجاب بھر کی فائر بریگیڈ جو محکمہ بلدیہ کے زیر انتظام کام کر رہی ہیں کو ریسکیو کے ماتحت کرنے کے احکامات پر بلدیہ حکام اور ریسکیو 1122آمنے سامنے آ گئے ہیں۔

ریسکیو 1122نے سیکرٹری کے لیٹر کے مطابق فائر بریگیڈ کی گاڑیوں، سٹاف اور آلات کو حوالے کرنے کیلئے بلدیہ حکام سے رابطہ شروع کر دیا ہے جس پر بلدیہ حکام نے وزیر بلدیات کی جانب سے ڈئرایکٹ احکامات تک اپنا ردعمل دینے سے انکار کیا ہے۔

اس حوالے سے فائر بریگیڈ یونین نے بغیر مشاورت کے احکامات جاری کرنے اور مستقل ملازمین کو کنٹریکٹ اور سروس سٹرکچر کے بغیر محکمہ کے ماتحت کرنے کے خلاف اعلی عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

فائر یونین کا کہنا ہے کہ محکمہ فائر بریگیڈ عرصہ دراز سے حکومتی عدم توجہ کا شکار ہے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ تیس تیس سال کے تجربہ کار ملازمین کو یک جنبش قلم ایک ناتجربہ کار اور غیر متعلقہ ڈی او کے ماتحت کر دیاجائے۔یونین کا کہنا ہے کہ اس بارے کیس تیار کر لیا گیا ہے جو بہت جلد زیر سماعت آئے گا ۔

اس حوالے سے شہریوں کا کہنا ہے کہ ریسکیو سروس کے اپنے کام بہت ہیں ان کو مزید محکموں کی سربراہی دے کر تباہ کرنے کی کوشش نہ کی جائے ۔

شہریوں نے بتایا کہ کچھ عرصہ قبل سول ہسپتال کی ایمبولینسوں کو ریسکیو 1122کے حوالے کیا گیا جس کے بعد سے شہریوں کو سہولت سے محروم کر دیا گیا ریسکیو حکام من مرضی کی شرطیں لگا کر ایمبولینس بھیجتے ہیں جبکہ ڈی او نے مغل بادشاہوں کا رویہ اختیار کر رکھا ہے اور ہر معاملہ میں من مرضی کے فیصلہ کرنا ان کی پہچان ہے۔

شہریوں نے وزیر بلدیات سے اپیل کی ہے کہ فائر بریگیڈ محکمہ محدود وسائل میں شہریوں کو بروقت سہولت فراہم کر رہا ہے اس لئے ریسکیو کے ماتحت کرنے کی بجائے اپ گریڈ کیا جائے اور اختیارات کو ایک جگہ جمع ہونے کی بجائے تقسیم کیا جائے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button